The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب کا سرمایہ کاروں کو گرین کارڈ جاری کرنے کا فیصلہ

ریاض : سعودی عرب غیر ملکی سرمایہ کاروں اور ماہرین کو ’’ گرین کارڈز ‘‘ فراہم کرنے فیصلہ کیا ہے جسے عملی جامہ پہنانے کے لیے تیزی سے کام کیا جا رہا ہے.

ان خیالات کا اظہار اقتصادی امور اور ترقی کونسل کے مقامی کانٹینٹ اور پرائیویٹ سیکٹر ڈویلپمنٹ یونٹ کے سربراہ فہد السکیت نے میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے.

فہد السکیت نے مزید بتایا کہ ولی عہد محمد بن سلمان کے ویژن 2030 کے اہداف کے حصول کے لیے نج کاری کا ایک بڑا منصوبہ زیر غور ہے جس میں زیادہ تر نجی شعبے اور اس کی ترقی پر انحصار کیا گیا ہے.

انہوں نے کہا کہ نج کاروں اور سرمایہ کاروں کے لیے گرین کارڈ متعارف کرانے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کے لیے درخواست گاروں کو ایک طے شدہ معیار پر پرکھا جائے گا اور جانچ پڑتال کے بعد کارڈ جاری کیا جائے گا.

 

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ سعودی گرین کارڈ کی اہلیت کا معیار تجارت اور سرمایہ کاری کی وزارت اور دوسرے ادارے مل کر طے کریں گے. یہ کارڈ صرف پیشہ ورانہ قابلیت رکھنے والے افراد کو مہیا کیا جائے گا.

انہوں نے مزید بتایا کہ گرین کارڈ محدود تعداد میں دستیاب ہوں گے کیونکہ ایک تو درخواست گزاروں کو مذکورہ معیار پر پورا اترنا ہوگا اور دوسرا مملکت میں کاروبار کے خواہاں غیر ملکی سعودی انویسٹمنٹ لائسنس بھی حاصل کرسکیں گے.

 

 

سعودی عرب کی شوریٰ کونسل کی مالیاتی کمیٹی کے وائس چیئرمین فہد بن جمعہ نے بھی غیرملکی سرمایہ کاروں کو سعودی عرب کا گرین کارڈ دینے کی تصدیق کی ہے.

خیال رہے وژن 2023 کے تحت سرمایہ کاروں کو متوجہ کرنے کےلیے سعودی عرب میں خصوصی اقدامات کیے جارہے ہیں اور حال میں کئی سخت قوانین میں نرمی بھی کی گئی ہے.

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں