The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب: سیاحت سے وابستہ 20 اسامیاں غیر ملکیوں کیلئے ممنوع قرار

ریاض: سعودی عرب نے سیاحت کے شعبے میں تقریباً 20 اسامیاں غیر ملکیوں کے لیے ممنوع قرار دے دیں۔

تفصیلات کے مطابق سعودی حکام نے جن اسامیوں کو غیر ملکیوں کے لیے ممنوع قرار دی ہیں، ان میں تھری اسٹار اور ان سے اعلیٰ درجے کے ہوٹلوں اور فرنشڈ اپارٹمنٹس شامل ہیں۔

عرب میڈیا کا کہنا ہے کہ کوئی بھی غیرملکی ان ہوٹلوں اور فرنشڈ اپارٹمنٹس میں بکنگ، مارکیٹنگ، ڈپٹی مینیجر، سیلز سیکشن کا سربراہ اور اسپورٹس کلب کا انچارج نہیں بن سکتا۔

یہ ساری اسامیاں سعودیوں کے لیے مخصوص کر دی گئی ہیں۔ سعودی عرب کی بیشتر آبادی نوجوانوں پر مشتمل ہے۔ سعودی عرب میں لاکھوں غیر ملکی زندگی کے مختلف شعبوں میں ملازمتیں کر رہے ہیں لیکن حکومت پرائیویٹ سیکٹر کی زیادہ تر ملازمتیں سعودی نوجوانوں کے لیے مختص کرنے کی پالیسی پر عمل پیرا ہے۔

سعودی عرب: خواتین کے لیے نوکریوں کی تعداد میں 130 فیصد اضافہ

سعودائزیشن ملک کی قومی پالیسی بن چکی ہے اور اسی ضمن میں سیاحت کی مزید 20 اسامیاں سعودیوں کے لیے مختص کر دی گئی ہیں۔

اس پالیسی کے مطابق ہوٹلوں اور فرنشڈ اپارٹمنٹس کے استقبالیہ، ریستورانوں اور قہوہ خانوں میں ویٹر بھی سعودی ہی ہوں گے۔

اس پابندی سے ڈرائیور، گیٹ کیپر اور پورٹر مستثنیٰ ہوں گے۔ 2019ء کے اختتام سے پابندی شروع اور آئندہ برس 2020ء کے اختتام تک مکمل طور پر نافذ ہوگی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں