The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب: ساڑھے تین کروڑ سال قدیم وہیل مچھلی

ریاض: مملکت سعودی عرب میں 37 ملین برس قدیم وہیل کا ڈھانچا دریافت ہو گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سعودی عرب کے ایک علاقے سے 3 کروڑ 70 لاکھ سال قدیم ڈھانچا دریافت ہوا ہے جو وہیل مچھلی کا ہے۔

یہ ڈھانچا سعودی جیالوجیکل ٹیم نے مملکت کے شمالی مغربی صحرا میں دریافت کیا، ماہرین کا کہنا ہے کہ نایاب وہیل کا ڈھانچا مکمل ہے، جیالوجیکل ٹیم کے سربراہ انجینئیر عبداللہ الشمرانی نے بتایا کہ ابتدا میں وہیل کی کچھ باقیات ہی دریافت ہوئی تھیں، مگر اب تقریباً اس کا مکمل ڈھانچا برآمد ہوگیا ہے۔

جیالوجیکل سروے ٹیم کے سربراہ نے مزید کہا کہ وہیل کا ڈھانچا مملکت کے شمالی علاقے کی القریات کمشنری کے مغربی جانب الحدیثہ قصبے کے قریب صحرا میں دریافت کیا گیا ہے، اور ماہرین اس بارے میں مزید تحقیق کر رہے ہیں۔

ماہرین کے مطابق دریافت وہیل کی عمر سینتیس ملین برس ہے، جس کا اندازہ اس کی باقیات اور اطراف میں ملنے والے چٹانی پتھروں کا تجزیہ کرنے سے لگایا گیا۔

یاد رہے کہ رواں برس جنوری میں ماہرین نے کہا تھا کہ جزیرہ نما عرب میں قدیم تہذیبوں کی 13 سے زائد عربی رسم الخط کی نقش عبارتیں دریافت کی گئی ہیں، اس حوالے سے قدیم عربی رسم الخط کے پروفیسر اور کنگ فیصل ریسرچ سینٹر میں کلچرل کنسلٹنٹ کی حیثیت سے کام کرنے والے ڈاکٹر سلیمان الدیاب کا کہنا تھا کہ سب سے پرانی تحاریر ثمود کے نقوش ہیں، جن کے بارے میں‌ کہا جا سکتا ہے کہ یہ تقریباً 1200 قبل مسیح کے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں