The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب : سرکاری اداروں میں داخلے پر پابندی کا خدشہ

ریاض : سعودی عرب میں سرکاری اور نجی اداروں میں جانے کے لیے بوسٹر ڈوز ضروری قرار دے دی گئی ہے، منگل یکم فروری2022 سے فیصلے پر عمل درآمد شروع ہوجائے گا۔

کسی بھی ایسے سعودی شہری یا مقیم غیرملکی کو جس نے بوسٹر ڈوز نہیں لی ہوگی، ان کو سرکاری اور نجی اداروں میں داخل نہیں ہونے دیا جائے گا۔

المرصد ویب نے وزارت داخلہ کے حوالے سے بتایا کہ یکم فروری2022 سے سرکاری اور نجی اداروں میں داخل ہونے کی واحد شرط یہ ہے کہ توکلنا ایپ میں صحت ریکارڈ محصن (امیون) ہو۔

ایپ میں محصن صرف ان افراد کے صحت ریکارڈ کے طور پر ہوگا جو بوسٹر ڈوز لگوائے ہوں گے اگر دوسری خوراک پر 8 ماہ یا اس سے زیادہ گزرچکے ہوں گے اور بوسٹر ڈوز نہیں لی ہوگی تو ایسی صورت میں توکلنا ایپ میں صحت ریکارڈ محصن نہیں آئے گا۔

اقتصادی، تجارتی، ثقافتی، سیاحتی اور کھیلوں کے کسی بھی پروگرام یا مقام پر جانے کے لیے بوسٹر ڈوز ضروری ہوگی۔

سرکاری اداروں یا نجی اداروں میں کام کرانے یا ڈیوٹی دینے کے لیے بھی وہی افراد جا سکیں گے جو بوسٹر ڈوز لیے ہوئے ہوں۔ ہوائی جہاز سے سفر اور پبلک ٹرانسپورٹ استعمال کرنے کے لیے بھی بوسٹر ڈوز ضروری ہوگی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں