The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب: 15 برس سے کم عمر بچوں کو ملازم رکھنا خلاف قانون

ریاض: سعودی عرب میں پبلک پراسیکیوشن نے کہا ہے کہ 15 برس سے کم عمر بچوں کو ملازم رکھنا ممنوع ہے، پراسیکیوشن نے اس حوالے سے ہدایات جاری کی ہیں۔

سعودی ویب سائٹ کے مطابق سعودی پبلک پراسیکیوشن نے کہا ہے کہ 15 برس سے کم عمر بچوں کو ملازم کے طور پر رکھنا ممنوع ہے، سعودی قانون محنت اور تحفظ اطفال قانون 15 برس سے کم عمر بچوں سے ملازمت کروانے کی اجازت نہیں دیتا۔

پبلک پراسیکیوشن نے انسداد روزگار اطفال کے عالمی دن کے موقع پر انتباہ جاری کیا۔

پبلک پراسیکیوشن نے تحفظ اطفال قانون کی متعلقہ دفعہ کا متن شائع کیا ہے جس میں کہا گیا کہ 15 سال سے کم عمر کے بچوں کو ملازم رکھنا ممنوع ہے، ایسے بچوں سے ایسا کوئی کام نہیں لیا جا سکتا جو ان کی جسمانی و ذہنی صحت یا سلامتی کے لیے نقصان دہ ہو۔

پراسیکیوشن کا کہنا تھا کہ ان سے کوئی فوجی کام نہیں لیا جا سکتا اور نہ ہی جنگوں میں شریک کیا جا سکتا ہے۔

پراسیکیوشن نے قانون محنت کی دفعہ جاری کی ہے جس کے مطابق ایسے کسی بچے کو جس کی عمر 15 سال نہ ہوئی ہو، اسے ملازم نہیں رکھا جا سکتا۔ اسے ڈیوٹی مراکز میں کام کے لیے جانے کی اجازت نہیں۔

متعلقہ وزیر بعض فیکٹریوں یا مخصوص مقامات پر ملازمت کے حوالے سے ممنوعہ عمر بڑھا سکتے ہیں، وزیر کو اس بات کا اختیار ہے کہ وہ 13 سے 15 برس تک کی عمر کے بچوں کو ہلکی ڈیوٹی والی ملازمت کرنے کی اجازت دیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں