The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب ایران کے ساتھ کوئی جنگ نہیں چاہتا، عادل الجبیر

لندن: سعودی عرب کے وزیر مملکت برائے امور خارجہ عادل الجبیر نے کہا ہے کہ ان کا ملک ایران کے ساتھ کوئی جنگ نہیں چاہتا ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق سعودی عرب کے وزیر مملکت برائے امور خارجہ عادل الجبیر نے لندن میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عالمی برادری ایران کے جارحانہ کردار کو روک لگانے کے لیے پرعزم ہے۔

انہوں نے واضح کیا کہ اگر ایران آبنائے ہرمز کو بند کرتا ہے تو اس کو بہت ہی سخت ردعمل کا سامنا کرنا پڑے گا، ایران کے جارحانہ کردار کی وجہ سے ہی صورت حال بہت سنگین ہوچکی ہے۔

عادل الجبیر نے کہا کہ جب ایران بین الاقوامی جہاز رانی میں رخنہ ڈالے گا تو اس کے توانائی کی سپلائی پر اثرات مرتب ہوں گے اس سے عالمی منڈی میں تیل کی قیمتوں پر بھی اثرات ہوں گے۔

انہوں نے ایران کے پڑوسی ملک عراق پر اثرات کے حوالے سے کہا کہ سعودی عرب انہیں کم سے کم کرنے کے لیے کام کررہا ہے اور بغداد کے ساتھ اپنے تعلقات مضبوط بنا رہا ہے۔

عادل الجبیر کاکہنا تھا کہ برطانیہ کا سعودی عرب کو اسلحہ کی درآمدات روکنے سے صرف ایران کو فائدہ ہوگا، یمن میں ہتھیاروں کی تنصیب سعودی عرب کا قانونی حق ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ برطانوی عدالت کے فیصلے کا لائسنسک کے طریقہ کار سے کچھ لینا دینا نہیں، کچھ بھی غلط نہیں ہوا ہے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل برطانیہ کی عدالت نے کہا تھا کہ برطانوی حکومت نے سعودی عرب کو اسلحے کی فروخت میں قانون کی پاسداری نہیں کی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں