The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب: ملازمت پیشہ افراد کے لیے خوشخبری

ریاض: سعودی عرب میں تحفظ اجرت قانون کے آخری مرحلے کا آغاز کر دیا گیا، تحفظ اجرت کے قانون کی منظوری وزارت افرادی قوت نے سنہ 2017 میں دی تھی۔

سعودی ویب سائٹ کے مطابق سعودی وزارت افرادی قوت نے تحفظ اجرت قانون کے آخری مرحلے کا آغاز کر دیا ہے، اس میں ایسے چھوٹے اداروں کو شامل کیا جائے گا جن میں کم سے کم ایک اور زیادہ سے زیادہ 4 ملازمین ہیں۔

وزارت افرادی قوت کی جانب سے سنہ 2017 میں تحفظ اجرت کے قانون کی منظوری دی گئی تھی، اس میں ابتدائی طور پر بڑی کمپنیوں اور اداروں کے کارکنوں کی اجرت کی وقت مقررہ پر ادائیگی کو یقینی بنانے کے لیے جامع منصوبے کا اعلان کیا گیا تھا۔

کارکنوں کی تنخواہوں کی ادائیگی کے لیے قانون کے مطابق کمپنیوں یا اداروں کے مالکان کو اس امر کا پابند بنایا گیا تھا کہ وہ کارکنوں کی تنخواہیں بینک کے ذریعے ادا کریں جس کے لیے کارکنوں کا بینک اکاونٹ لازمی قرار دیا گیا تھا۔

کارکنوں کی ماہانہ تنخواہ کا مکمل ریکارڈ وزارت کی ویب سائٹ پر بھی اپ لوڈ کرنا لازمی ہے۔

وزارت کی جانب سے مزید کہا گیا تھا کہ ایسے کارکن جن کے بینک اکاؤنٹ نہیں ہیں اور جب تک ان کے اکاؤنٹ نہیں کھل جاتے ان کی تنخواہوں کی بروقت ادائیگی کو یقینی بنانے کے لیے ادارے ماہانہ تنخواہوں کی ادائیگی کا چارٹ بنا کر وزارت کو پیش کرنے کے پابند ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں