site
stats
بزنس

سعودی عرب: غیرملکی ملازمین کی تعداد آبادی کا 33 فیصد ہوگئی

ریاض: سعودی حکومت نے ملک بھر کے نجی سیکٹر میں موجود غیر ملکی ملازمین سے متعلق اعدادو شمار جاری کردیے، اس وقت ملکی آبادی 3 کروڑ 27 لاکھ سے زائد ہے جب کہ 1 کروڑ 11 غیر ملکی ملازمین پرائیویٹ سیکٹر میں کام کررہے ہیں۔

گلف نیوز نے سعودی عرب کی وزارت داخلہ کے نیشنل انفارمیشن سینٹر کے جاری کردہ اعدادو شمار کے حوالے سے بتایا ہے کہ اس وقت ایک کروڑ 11 لاکھ 19 ہزار 370 ملازمین سعودی عرب کے پرائیویٹ سیکٹر میں کام کررہے ہیں۔

ملازمین کے اہل خانہ کی تعداد 22 لاکھ 21 ہزار

ان کے ساتھ موجود اہل خانہ کے افراد کی تعداد 22 لاکھ 21 ہزار 551 ہے انہیں ملایا جائے تو ملازمین اور ان کے اہل خانہ کی تعداد ایک کروڑ 33 لاکھ 40 ہزار 921 بنتی ہے۔

ایک کروڑ 9 لاکھ ملازمین کی عمریں 20 تا 64 کے درمیان

سعودی عرب کے ایک موقر روزنامہ  میں شائع اسی رپورٹ کے مطابق ان غیر ملکی ملازمین میں سے 1 کروڑ 9 لاکھ 76 ہزار 854 کی عمریں 20 سال سے 64 سال کے درمیان ہیں جن کے 16 لاکھ 89 ہزار 874 رشتہ دار یہاں موجود ہیں۔

ساڑھے 9 ہزار ملازمین کی عمریں 20 سال سے کم

اسی طرح 9 ہزار 646 ملازمین ایسے ہیں جن کی عمریں 20 برس سے کم ہیں جب کہ ایک لاکھ 32 ہزار 870 ملازمین کی عمریں 64 برس سے زائد ہیں۔

سعودی عرب کی کل آبادی 3 کروڑ 17 لاکھ

سعودی عرب کی جنرل اتھارٹی آف اسٹیٹس (ادارہ شماریات) سعودی عرب کی کل آبادی 3 کروڑ 17 لاکھ 42 ہزار ہے جب کہ غیر ملکی ملازمین کی تعداد 1 کروڑ 11 لاکھ سے زائد ہے جو مجموعی آبادی کا قریبا 33 فیصد ہے۔

سعودی عرب کی کل آبادی کا 40 فیصد غیر ملکی باشندے ہیں

اسی طرح ملازمین اور ان کے اہل خانہ کی مجموعی تعداد ایک کروڑ 33 لاکھ سے زائد ہے جو کہ مجموعی آبادی کا 40 فیصد ہے۔

غیر ملکی باشندوں کی تعداد مقامی آبادی کے برابر ہوسکتی ہے

جس حساب سے غیر ملکی باشندوں کی سعودی عرب آمد جاری ہے اگر یہ شرح برقرار رہی تو آئندہ چند برس میں سعودی عرب میں موجود غیر ملکی باشندوں کی تعداد مقامی افراد کے برابر ہوجائے گی۔

سعودی عرب نے حال ہی میں اپنے سعودیزیشن پلان 2020 کا اجرا کیا ہے جس کے تحت سعودی باشندوں کو روزگار دلانے کے لیے باقاعدہ مہم چلائی جارہی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top