The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب : بے گھر افراد کیلیے حکومت کا بہت بڑا فیصلہ

سعودی وزیر بلدیات، دیہی امور اور ہاؤسنگ کی جانب سے ریاض ریجن میں ہاؤسنگ یونٹس کے معاہدوں پر دستخط کیے جانے کے بعد سعودی عرب کے ہزاروں انتہائی ضرورت مند خاندانوں کو پانچ سال میں پانچ ہزار رہائشی یونٹس فراہم کیے جائیں گے۔

عرب نیوز کے مطابق سعودی وزیر بلدیات، دیہی امور اور ہاؤسنگ ماجد الحقیل نے ریاض میں نیشنل ڈویلپمنٹ ہاؤسنگ کارپوریشن (سکن) اور چیریٹیبل سوسائٹی فارآرفنز کیئر(انسان) کے ساتھ معاہدوں پر دستخط کیے ہیں۔

ان معاہدوں پرریاض کے گورنر فیصل بن بندرکی موجودگی میں دستخط کیے گئے جو انسان کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے سربراہ بھی ہیں۔

ریاض کے گورنر نے وزارت اور دونوں تنظیموں کی کوششوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ خاندانوں کی سب سے اہم ضرورت کے لیے غیر منافع بخش اورانسانی ہمدردی کے کاموں کو شروع کرنا ایک باوقار زندگی اورمستقبل فراہم کرتی ہے۔

انسان، یتیموں کو اعلی معیار کے پروگراموں اور ایک ممتاز طریقہ کے ساتھ ایک مہذب زندگی گزارنے میں مدد کرنے پر مرکوز ہے جو کمیونٹی کا اعتماد حاصل کرے گا۔

معاہدوں کا مقصد غیر منافع بخش شعبے کے لیے ضروری ماحول پیدا کرنا ہے تاکہ ملک کی مجموعی گھریلو پیداوار میں اپنا حصہ بڑھایا جا سکے، لوگوں کے لیے خاندانی استحکام حاصل کیا جا سکے اور کئی شہروں میں سعودی گھر کی ملکیت میں اضافہ ہو۔

معاہدوں میں پانچ ہزارہاؤسنگ یونٹس ہیں، وزارت کے پراجیکٹس کے اندردو ہزار ریڈی میڈ ہاؤسنگ ولاز، ایک ہزار500 پلاٹوں کی الاٹمنٹ جو وزارت فراہم کرنے کے لیے پرعزم ہے جبکہ ایک ہزار 500 پلاٹوں کی  الاٹمنٹ سے فائدہ اٹھانے والوں کی زمین یا زمین چیرٹی اداروں سے ان کے لیے مختص کیا گیا ہے۔

سعودی وزیر بلدیات، دیہی اموراور ہاؤسنگ ماجد الحقیل نے تیسرے شعبے کی شراکت کو فروغ دینے اور ہاؤسنگ ڈویلپمنٹ پروگراموں کی حوصلہ افزائی میں معاہدوں کے مؤثر کردار پر زور دیا۔

انہوں نے سول ایسوسی ایشنز کو بااختیار بنانے، ضرورت مند خاندانوں کے لیے رہائش فراہم کرنے، خاندانوں کے لیے معیار زندگی کو بڑھانے، اس کے اراکین کو معاشی اور سماجی طور پر ترقی دینے کے لیے کمیونٹی کے اراکین کے ساتھ شراکت میں ضروری مالی وسائل فراہم کرنے میں سکن کے کردار کو بھی نوٹ کیا۔

ماہر عمرانیات ڈاکٹرعبداللہ الاحسن نے کہا کہ جب خاندانوں کے پاس اپنی رہائش نہیں ہوتی تو ان کے بعض ارکان کو تناؤ اور مشکل وقت کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے جو نفسیاتی ڈس آرڈرز کا باعث بن سکتا ہے اور مایوسی کے نتیجے میں منفی رویے کی شکل میں ظاہر ہو سکتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ حکومت نجی اورغیر منافع بخش شعبوں کی حوصلہ افزائی کر رہی ہے کہ وہ گھر کی ملکیت کے انیشیٹو کو اسپانسر کریں۔

ڈاکٹر عبداللہ الاحسن نے چیریٹی ہاؤسنگ کے اقدامات پر زور دیا کہ جب تک وہ حقیقت نہیں بن جاتے اس کی سپورٹ کی جائے اس طرح کا نتیجہ سماجی استحکام کی عمومی سطح کو حاصل کرے گا۔

انہوں نے منافع بخش شعبے کی حوصلہ افزائی کی اہمیت پر زور دیا جس نے سرکاری مراعات کے ذریعے مکانات کو محفوظ بنانے میں کردار ادا کیا۔ انہوں نے یہ امید بھی ظاہر کی کہ غیر منافع بخش شعبہ اس سے بہتر کردار ادا کرے گا جو اس نے اپنے ٹولز تیار کرکے ادا کیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں