The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب : غیرملکیوں کو اقامہ کیسے جاری کیا جاتا ہے؟

ریاض : خروج وعودہ ویزہ سنگل انٹری اور ملٹی پل انٹری دو طرح کے ہوتے ہیں، سنگل انٹری ویزے کی بھی دو کیٹگری ہیں۔

جن افراد کے اقامے کی مدت 6 ماہ سے کم ہے انہیں دنوں کے حساب سے ویزہ جاری کیا جاتا ہے جبکہ وہ تارکین جن کے اقامے کی ایکسپائری مدت 6 ماہ سے زائد ہے انہیں 30 دن 60 اور 120 دن کے ویزے جاری کیے جاتے ہیں۔

ملٹی پل انٹری ویزے ایسے افراد کے لیے بہتر ہیں جو محدود مدت کے دوران متعدد بار بیرون مملکت سفر کرتے ہوں۔ ملٹی پل ایگزٹ ری انٹری ویزے کا مقصد زیادہ سفر کرنے والوں کو سہولت فراہم کرنا ہے تاکہ انہیں بار بار ویزہ حاصل نہ کرنا پڑے۔

اقامہ میں 40 دن باقی ہیں کیا خروج وعودہ لگایا جاسکتا ہے؟
خروج وعودہ کے حوالے سے محکمہ پاسپورٹ اینڈ امیگریشن ’جوازات‘ کے مطابق خروج و عودہ دو طرح کے جاری کیے جاتے ہیں۔ جن میں محدود مدت ہو وہ دنوں کے حساب سے جاری ہوتا ہے جبکہ دوسرا مہینوں کے حساب سے۔

سوال کا جواب دیتے ہوئے جوازات کا کہنا تھا کہ خروج و عودہ جو دنوں کے حساب سے جاری کیا جاتا ہے اس کے مطابق اقامہ کی آخری مدت تک کے لیے ایگزٹ ری انٹری حاصل کیا جا سکتا ہے۔

جہاں تک سوال کا تعلق ہے اس حوالے سے جوازات کا کہنا تھا کہ اس کیس میں دنوں کے حساب سے خروج وعودہ ویزہ جاری کرایا جا سکتا ہے۔

واضح رہے کہ دنوں کے حساب سے جو خروج و عودہ جاری کیا جاتا ہے اس کا حساب یعنی کاؤنٹ ڈاؤن خروج و عودہ جاری ہونے کے ساتھ ہی شروع ہو جاتا ہے۔

ایگزٹ ری انٹری ویزہ جو دنوں کے حساب سے جاری کرایا جاتا ہے اس میں واپسی کی تاریخ کا اندراج کیا جاتا ہے۔

واپسی کی تاریخ کو مدنظر رکھتے ہوئے اس سے ایک دن قبل پہنچ جانا بہتر ہے۔ اگر مزید قیام کا ارادہ ہوتو اقامہ میں توسیع کرنے کے بعد ایگزٹ ری انٹری کی مدت میں توسیع کرائی جاسکتی ہے۔

خروج و عودہ کی مدت میں توسیع کرانے کی کم از کم فیس 100 ریال ہے جو 30 دن کے لیے ہوتی ہے۔ جتنے دن توسیع کرائی جائے اسی اعتبار سے فیس جمع کرائی جائے گی تاہم فیس 100 ریال سے کم نہیں ہوتی۔

ملٹی پل ایگزٹ ری انٹری ویزے میں تین ماہ باقی ہیں، کیا ٹریفک چالان سفر میں رکاوٹ بن سکتے ہیں؟
سوال کے جواب میں جوازات کا کہنا تھا کہ غیر ملکی کارکنوں کے لیے لازمی ہے کہ سفر سے قبل ان کے ریکارڈ پر کسی قسم کا واجب الادا چالان باقی نہ ہو۔

واضح رہے کہ ملٹی پل ایگزٹ ری انٹری ویزہ مملکت سے متعدد بار سفر کرنے والوں کو جاری کیا جاتا ہے جس سے یہ سہولت میسر ہوتی ہے کہ انہیں بار بار ایگزٹ ری انٹری ویزہ جاری کرانے کی ضرورت نہیں رہتی۔

تاہم سفر کرنے سے قبل اگر کسی کے ریکارڈ پرٹریفک چالان وغیرہ موجود ہے تو اسے سفر کرنے کی اجازت اس وقت تک نہیں ہوتی جب تک وہ چالان کی رقم ادا کر کے اپنا ریکارڈ صاف نہیں کر لیتا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں