ہفتہ, مئی 25, 2024
اشتہار

سعودی عرب نے یمن اور فلسطین سے متعلق مؤقف واضح کر دیا

اشتہار

حیرت انگیز

ریاض: سعودی عرب نے یمن اور فلسطین سے متعلق مؤقف واضح کرتے ہوئے کہا ہے کہ یمن میں جنگ بندی کو بحال کیا جائے اور مسئلہ فلسطین کو حل کیا جائے۔

عرب نیوز کے مطابق سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے بدھ کو ڈیووس میں ورلڈ اکنامک فورم کے ایک مباحثے میں کہا کہ یمن میں گزشتہ برس کی جنگ بندی کو بحال کیا جائے۔

انھوں نے کہا کہ یمن پر پیش رفت ہورہی ہے لیکن ابھی بہت کام کرنے کی ضرورت ہے، جنگ بندی کو مستقل کرنے کے لیے کام کرنا چاہیے، یہ تنازع صرف ’سیاسی تصفیے‘ اور ’مذاکرات کے ذریعے حل‘ سے ختم ہوگا۔

- Advertisement -

شہزادہ فیصل بن فرحان نے فلسطینی بحران کا ذکر کرتے ہوئے امید ظاہر کی کہ نئی اسرائیلی حکومت یہ دیکھے گی کہ مسئلے کے حل کے لیے فلسطینوں سے سنجیدگی سے بات چیت کرنا ان کے مفاد میں ہے۔

انھوں نے واضح کیا کہ اسرائیلی حکومت کچھ ایسے اشارے بھیج رہی ہے، جو اس کے لیے شاید سازگار نہ ہوں، لیکن امید ہے کہ اسرائیلی حکومت فلسطینی عوام اور خطے کے وسیع تر مفادات میں تنازع کے حل کے لیے کام کرے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ سعودی عرب پورے خطے کے مفاد کے لیے مکالمے اور فیوچر انویسٹمنٹ پر توجہ مرکوز کیے ہوئے ہے، سعودی وژن 2030 ہمیں پورے خطے کی معیشت بنانے، سنوارنے کا موقع دے رہا ہے۔

Comments

اہم ترین

ویب ڈیسک
ویب ڈیسک
اے آر وائی نیوز کی ڈیجیٹل ڈیسک کی جانب سے شائع کی گئی خبریں

مزید خبریں