The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب : بچے کہاں جائیں؟ نجی اسکولوں سے متعلق بڑا فیصلہ

ریاض : سعودی عرب میں نجی اسکول مالکان نے فیصلہ کیا ہے کہ اسکولوں کی نرسری کلاسز بند کرنے کے ساتھ ساتھ ان کی ٹیچرز کی ملازمت بھی ختم کردی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق سعودی عرب کے مشرقی ریجن ایوان تجارت میں نجی تعلیم و تربیت کمیٹی کے چیئرمین خالد الجویرۃ نے کہا ہے کہ کورونا وبا کے باعث نرسری اسکولوں کے مالکان کو بھاری نقصان ہوا ہے اس لیے انہوں نے ناقابل برداشت خسارے کے بعد نرسری کلاسز بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

سعودی ذرائع ابلاغ کے مطابق خالد الجویرۃ نے بتایا کہ نجی اسکولوں کی انتظامیہ نے نرسری کی نوے فیصد ٹیچرز کی ملازمت کے معاہدے بھی ختم کردیے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ نقصانات سے تنگ آکر نرسری اسکولوں کے مالکان نے اپنے اسکول فروخت کرنا شروع کردیے ہیں۔ مالکان کا کہنا ہے کہ اب وہ مزید خسارے کے متحمل نہیں ہوسکتے۔

مشرقی ریجن میں محکمہ تعلیم کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر ناصر الشلعان نے وعدہ کیا ہے کہ وہ نجی اسکولوں کے مالکان کے مطالبات وزارت تعلیم کے فیصلہ ساز عہدیداروں تک پہنچائیں گے۔

انہوں نے یہ وعدہ ایسے وقت کیا ہے جب نجی اسکولوں کے مالکان نے ان کے سامنے اپنے مطالبات رکھے تھے۔ خالد الجویرۃ نے بتایا کہ اسکولوں میں حاضری کی معطلی اور بیشتر طلبہ کے سرکاری اسکولوں میں داخلہ لے لینے کے باعث نرسری اسکول ٹریننگ سینٹر اور دیگر اسکول خسارے میں چلے گئے ہیں۔ مجبوراً سکول فروخت کرنا پڑ رہے ہیں جبکہ نرسری اسکولوں کی ٹیچرز کوایک سال کی چھٹی پر بھیج دیا گیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں