جمعہ, جولائی 19, 2024
اشتہار

سعودی عرب میں سیاحت کا شعبہ عروج پر

اشتہار

حیرت انگیز

ریاض: سعودی عرب میں سیاحت کا شعبہ تیزی سے بحال ہورہا ہے، ہر سال سیاحوں کی تعداد میں گزشتہ سال کے مقابلے میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔

اردو نیوز کے مطابق پروفیشنل سروسز نیٹ ورک فرم پی ڈبلیو سی مڈل ایسٹ کے مطابق بلند افراط زر، جغرافیائی سیاسی کشیدگی اور بڑھتی ہوئی شرح سود کی وجہ سے پیدا ہونے والی عالمی اقتصادی غیر یقینی صورتحال کے درمیان سعودی عرب کا سیاحت کا شعبہ تیزی سے بحال ہو رہا ہے۔

پی ڈبلیو سی مڈل ایسٹ نے اپنی حال ہی میں جاری کی گئی رپورٹ میں کہا ہے کہ 2022 کی چوتھی سہ ماہی میں تقریباً 6 ملین وزیٹرز مملکت آئے جو 2019 کی اسی سہ ماہی کے مقابلے میں 47 فیصد زیادہ ہے۔

- Advertisement -

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ریگولیٹری اصلاحات اور ریاض سیزن فیسٹیول جیسے پرکشش مقامات کی ترقی مملکت میں سیاحت کے شعبے کو آگے بڑھا رہی ہے جس کا ٹارگٹ رواں سال 25 ملین سیاحوں کی آمد ہے جو 2019 کے مقابلے میں 43 فیصد زیادہ ہے۔

سعودی عرب کی قومی سیاحت کی حکمت عملی کا مقصد 2030 تک 100 ملین وزیٹرز کو راغب کرنے کے ساتھ مملکت کی مجموعی گھریلو پیداوار میں اس شعبے کے تعاون کو 10 فیصد سے زیادہ کرنا ہے۔

اس حکمت عملی کے تحت مملکت میں اضافی ایک ملین ملازمتیں پیدا کرنے پر بھی نظر رکھی گئی ہے۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ سعودی عرب کا وژن 2030 مملکت کی معیشت کی تشکیل کے لیے ایک طاقتور فریم ورک فراہم کر رہا ہے۔

پی ڈبلیو سی مڈل ایسٹ کے ڈپٹی کنٹری لیڈر فیصل السراج کا کہنا ہے کہ سعودی عرب کی معیشت نے وژن 2030 کے آغاز کے بعد سے زبردست ترقی کا مظاہرہ کیا ہے، مملکت کی تنوع پر بڑھتی ہوئی توجہ نے ملک کو اس قابل بنایا ہے کہ وہ اپنے اقتصادی استحکام کے ایجنڈے کو بڑے پیمانے پر آگے بڑھا سکے۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں امید ہے کہ مملکت کا مستقبل وژن 2030 سے آگے بڑھے گا اور اختراعی حل کے ذریعے رہنمائی کرتا رہے گا۔

Comments

اہم ترین

ویب ڈیسک
ویب ڈیسک
اے آر وائی نیوز کی ڈیجیٹل ڈیسک کی جانب سے شائع کی گئی خبریں

مزید خبریں