The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب : تقریبات میں شرکت کے لئے نئے احکامات جاری

ریاض : وزارت بلدیات و دیہی و آباد کاری امور نے شادی گھروں، تقریبات کے مراکز اور استراحات (گیسٹ ہاؤسز) آنے جانے والوں کے حوالے سے کورونا ایس او پیز مقرر کیے ہیں، یہ کام ادارہ صحت عامہ (وقایہ) کے تعاون سے انجام دیا گیا ہے۔

سعودی ذرائع ابلاغ کے مطابق وزارت بلدیات و دیہی و آباد کاری امور نے کورونا ایس او پیز کی تفصیلات جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ مذکورہ اداروں میں آنے جانے والوں کے لیے سماجی فاصلے کی پابندی ضروری کردی گئی ہے۔

پابندی کے احکامات پر مکمل عمل درآمد کو یقینی بنانے کے لیے شادی گھروں، تقریبات مراکز اور گیسٹ ہاؤسز کی باقاعدہ نگرانی کی جائے گی۔

Corporate Event Organized Hall Hotel KSA – Ken Research: Industry Research  Reports

وزارت بلدیات و دیہی و آباد کاری امور نے سختی سے تاکید کی ہے کہ مذکورہ مقامات کے دروازوں پر توکلنا ایپ میں بارکوڈ کو اسکین کرکے ہی داخل ہونے کی اجازت ہوگی۔

اس سے مذکورہ مقامات کے ملازمین مستثنیٰ ہوں گے، مذکورہ مقامات پر صرف "محصن” ہی داخل ہوسکیں گے، اس کا پتہ توکلنا ایپ کے ذریعے حاصل کیا جائے گا۔

شادی گھروں میں مہمانوں اور کارکنان کو ماسک کی ہمہ وقت پابندی کرنا ہوگی، کارکن خواتین کو استقبالیہ مقامات پر ہاتھ پابندی سے دھونے ہوں گے اور سینیٹائزر استعمال کرنا ہوگا۔

وزارت نے پابندی لگائی ہے کہ نجی سامان کے امانت خانوں کو مقررہ نظام الاوقات کے مطابق سینیٹائز کرتے رہنا ہوگا، مذکورہ تمام مقامات پر سماجی فاصلے کی علامتیں چسپاں ہوں اور سب اس کی پابندی کریں۔

وزارت بلدیات نے تاکید کی ہے کہ میوزک ٹیم کے لیے مختص مقام پر اژدہام نہ ہو، سماجی فاصلے کی پابندی لازمی طور پر کی جائے۔

مہمانوں کو تاکید کی گئی ہے کہ اگر وہ بخار کی کیفیت یا تنفس کی علامات محسوس کریں تو پہلی فرصت میں انتظامیہ کو اس سے مطلع کریں، یہی پابندی دیگر ملازمین کے لیے بھی ہے۔

In Saudi Arabia's millennial weddings, small is the new beautiful

اس کے علاوہ شادی گھروں کے صدر دروازے پر چیکنگ پوائنٹ کا بندوبست کیا جانا ضروری ہے، آنے والوں سے توکلنا ایپ پر ان کا ریکارڈ دریافت کیا جائے اس کے بغیر انہیں اندر نہ جانے دیا جائے۔

وزارت نے گائیڈ بک جاری کرکے کارکنان کے حوالے سے تمام ہدایات تحریر کردی ہیں کہ اگر کارکنان میں سے کوئی ایک وائرس کا شکار ہو تو ایسی صورت میں کیا کچھ کرنا ہوگا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں