The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب میں نیا قانون منظور، تارکین وطن رشتے داروں کو عمرہ ویزا پر بلاسکیں گے

ریاض: سعودی عرب نے مملکت میں مقیم شہری اور تارکین وطن کو خوشخبری سنادی جس کے مطابق غیرملکی شہری اپنے رشتے داروں کو عمرہ ویزا پر بلاسکیں گے۔

عرب میڈیا کے مطابق سعودی حکام نے کہا ہے کہ سعودی عرب کے شہری اور ملک میں مقیم تارکین وطن اپنے قریبی رشتے داروں کے لیے عمرہ ویزا جاری کرسکیں گے، وزارت حج عمرہ کے سیکریٹری ڈاکٹرعبدالعزیز وزان نے بتایا کہ ویزے سے متعلق اس نئے قانون کو بہت جلد نافذ کیا جائے گا۔

نئے قانون کے مطابق سعودی عرب میں مقیم تمام تارکین وطن اپنے تین سے پانچ رشتے داروں کو عمرہ ویزا جاری کرواسکتے ہیں، سعودی شہری اور غیرملکی سال میں تین مرتبہ اپنے عزیزوں کو عمرہ کے لیے سعودی عرب بلاسکیں گے۔

عمرہ ویزا جاری کرنے کا طریقہ یہ ہے کہ عمرے کے خواہش مند افراد اپنے ملک میں کسی عمرہ ایجنٹ سے پیکیج خریدتے ہیں اور اسی کے مطابق انہیں عمرہ ویزا جاری کیا جاتا ہے۔

مزید پڑھیں: سعودی عرب: نئی ویزا پالیسی جاری کردی گئی

ڈاکٹر عبدالعزیز وزان کے مطابق اس قانون کے شرائط کے تحت رشتے دار قریبی ہونے چاہئیں اور جن رشتے داروں کو عمرہ ویزا پر بلایا جائے گا ان کی مکمل میزبانی اور ان کے ویزے کی مدت ختم ہونے سے پہلے ان کی وطن واپسی کی ذمہ داری بھی ان کے قریبی عزیر پر ہوگی۔

نئی پالیسی کے مطابق کسی بھی فلسطینی مسلمان کو اردن اور لبنان کے ویزے پر داخلے کی اجازت نہیں دی جائے گی، جس سے لاکھوں فلسطینیوں کے متاثر ہونے کا خدشہ ہے۔

خیال رہے کہ سعودی عرب نے گزشتہ سال نومبر میں اپنی نئی ویزا پالیسی کے تحت فلسطینیوں پر حج اور عمرہ کی ادائیگی پر پابندی عائد کردی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں