سعودی اتحادی افواج نے یمن سے متعلق اقوام متحدہ کی رپورٹ کو غیر شفاف قرار دے دیا
The news is by your side.

Advertisement

سعودی اتحادی افواج نے یمن سے متعلق اقوام متحدہ کی رپورٹ کو غیر شفاف قرار دے دیا

ریاض: یمن میں سعودی اتحادی افواج کی کارروائیاں اور عام شہریوں کی ہلاکتوں سے متعلق اقوام متحدہ کی رپورٹ کو عرب اتحاد نے غیر شفاف قرار دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق یمن کی بندرگاہ الحدیدہ میں سعودی اتحادی افواج اور یمن کی سرکاری فوج کی جانب سے مشترکہ فوجی آپریشن جاری ہے، جبکہ آپریشن میں فضائی کارروائیوں کی بھی مدد لی جارہی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق سعودی عسکری اتحاد نے الزام عائد کیا ہے کہ یمن میں فضائی حملوں سے متعلق اقوام متحدہ کی رپورٹ غیر شفاف ہے۔

حال ہی میں اقوام متحدہ کی ایک رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ سعودی عسکری اتحاد کی ایک فضائی کارروائی میں کم از کم چھبیس بچے مارے گئے تھے۔ بعد ازاں عرب اتحاد نے ان ہلاکتوں کی تردید کی تھی۔

یمن میں عام شہریوں پر حملہ، سعودی اتحادی افواج نے الزامات مسترد کردیے

دوسری جانب سعودی عسکری اتحاد نے موقف اختیار کیا ہے کہ وہ ایسی بعض رپورٹوں پر حیران ہیں، جو یکطرفہ اور حوثی باغیوں کی کہانیوں پر مبنی ہیں۔

خیال رہے کہ گذشتہ ماہ اقوام متحدہ کے یمن میں انسانی حقوق کے رکن ’لیز گرانڈ‘ نے کہا تھا کہ الحدیدہ میں فضائی بمباری سے ہزاروں معصوم یمنی شہریوں کی جان خطرے میں ہے، فضائی کارروائی بند نہ کی گئی تو ہم سنگین تنائج دیکھ رہے ہیں۔

واضح رہے کہ رواں ماہ کے آغاز میں یمنی صوبہ صعدہ میں سعودی اتحادی افواج کی جانب سے فضائی بمباری کی گئی تھی، جس کے نتیجے میں متعدد عام شہریوں کی ہلاکتیں ہوئی تھیں، بعد ازاں عرب عسکری اتحاد نے اس حملے میں عام شہریوں کی ہلاکت کی تردید کی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں