The news is by your side.

Advertisement

سعودی حکام غیر ملکی کارکنان کے مسائل حل کرنے کیلئے کوشاں

ریاض : سعودی عرب میں کام کرنے والے غیرملکی افراد کی بڑی تعداد نے مختلف مسائل کے باعث ملک چھوڑنے کا فیصلہ کرلیا، ہزاروں غیر ملکی افراد نے فائنل ایگزٹ کے لیے درخواستیں دے دیں۔

تفصیلات کے مطابق سعودی عرب میں روزگار کیلئے مختلف ممالک سے آنے والے لوگ خود کو درپیش مشکلات کے سبب ملک چھوڑنے کو ترجیح دے رہے ہیں۔

اس حوالے سے اس سال کے آغاز پر مشکلات سے دو چار کمپنیوں کے8 ہزار376 غیر ملکی کارکنوں نے فائنل ایگزٹ کے لیے درخواستیں دی ہیں۔

سعودی وزارت افرادی قوت و سماجی بہبود کے مطابق ان افراد کے مسائل کے حل کیلئے ان کے ممالک کے سفارت خانوں کے نمائندوں سے ملاقاتیں کی ہیں،کارکنوں کے واجبات اور حقوق کی ادائیگی اور وطن واپسی کے ٹکٹ کے اجرا کے معاملات سفارت خانوں کے ذریعے طے کیے گئے۔

سعودی ذرائع ابلاغ کے مطابق اس حوالے سے ریاض ریجن میں افرادی قوت کے ادارے کے ڈائریکٹر عبدالکریم عسیری نے بتایا ہے کہ وزارت افرادی قوت و سماجی بہبود مختلف شعبوں کے کارکنوں کے لیے ملازمت کا مناسب ماحول فراہم کرنے کی کوششیں کر رہی ہے۔
یاد رہے کہ سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے 25 فروری 2020 کو وزارت محنت و سماجی بہبود اور وزارت شہری خدمات

کو ایک دوسرے میں ضم کر کے نئی وزارت کی تشکیل کا فرمان جاری کیا تھا۔ نئی وزارت کا نام وزارت افرادی قوت و سماجی بہبود رکھا گیاہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں