The news is by your side.

Advertisement

سعودی حکام نے غیر ملکی تارکین وطن کی بڑی مشکل آسان کردی

خروج نہائی کے لیے کارآمد ‘اقامے’ کا ہونا ضروری ہے یا نہیں؟ سعودی حکام نے غیر ملکی تارکین کی بڑی مشکل آسان کردی۔

تفصیلات کے مطابق ایک شخص نے جوازات کے ٹوئٹر پردریافت کیا کہ ’والدین اقامہ پرہیں، پانچ ماہ قبل بچے کی ولادت ہوئی تھی، فیملی فیس ادا نہ کرنے کی باعث اقامہ جاری نہیں کرایا جاسکا، کیا خروج نہائی لگایا جاسکتا ہے؟۔

جس پر سوال کا جواب دیتے ہوئے جوازات کا کہنا تھا کہ خروج نہائی کے لیے کارآمد اقامہ کا ہونا ضروری ہے، خروج نہائی اس وقت تک نہیں لگایا جاسکتا جب تک کارآمد اقامہ نہ ہو۔

واضح رہے سعودی عرب میں دو ہزار سترہ سے ایسے تارکین جو اپنے اہل خانہ کے ہمراہ مقیم ہیں ان پر فی فرد ماہانہ بنیاد پر100 ریال فیس عائد کی گئی تھی، فیملی فیس میں سالانہ 100 ریال اضافہ مقرر کیا گیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: عوام کو سہولت : سعودی حکومت نے ایک اور قانون نافذ کردیا

واضح رہے کہ مملکت میں مقیم تارکین کے اہل خانہ کا اقامہ کیونکہ سربراہ خانہ کے اقامے سے منسلک ہوتا ہے، اس لیے جب تک فیملی کی ماہانہ بنیاد پرفیس ادا نہیں کی جاتی اقامہ تجدید نہیں کیا جا سکتا۔

اسی لئے فیملی کے ہمراہ مملکت میں مقیم تارکین وطن کے لیے لازمی ہے کہ وہ گھر کے ہر فرد کے حساب سے ماہانہ بنیاد پر فیس ادا کریں جس کے بعد ہی ان کا اقامہ تجدید کیا جا سکتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں