کتابیں باہر سے خریدنے پر اسکول پرنسپل کا بچے پر تشدد -
The news is by your side.

Advertisement

کتابیں باہر سے خریدنے پر اسکول پرنسپل کا بچے پر تشدد

گوجرانوالہ: صوبہ پنجاب کے شہر گوجرانوالہ میں ایک نجی اسکول کے پرنسپل نے کتابیں باہر سے خریدنے پر 9 سالہ بچے کو تشدد کا نشانہ بنا دیا۔

تفصیلات کے مطابق گوجرانوالہ کے علاقے کنگنی والا کے رہائشی محنت کش محمد اشفاق کا 9 سالہ بیٹا قمر حسین ہاشمی کالونی کے نجی اسکول میں زیر تعلیم ہے۔

اسکول پرنسپل عزیز الرحمن نے بچے سے اسکول سے کتابیں خریدنے پر زور دیا تو بچے نے بتایا کہ اس کے والدین نے اسے تمام کتابیں باہر سے خرید کر دے دی ہیں۔

جس پر طیش میں آ کر مبینہ طور پر اسکول کے پرنسپل عزیز الرحمن نے بچے کو جوتوں کے ساتھ شدید تشدد کا نشانہ بنا کر گھر بھجوا دیا۔

واقعہ کی اطلاع ملنے پر بچے کے والد محمد اشفاق نے پولیس سے رابطہ کیا جس پر تھانہ سبزی منڈی پولیس نے بچے کے والد کی درخواست پر مقدمہ درج کرکے واقعہ کی تحقیقات شروع کردی۔

دوسری جانب بچے کے والد نے زخمی قمر حسین کو علاج کےلیے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر اسپتال منتقل کردیا۔

مزید پڑھیں: چترال:نجی اسکول کے پرنسپل کا طلبہ پر وحشیانہ تشدد، مقدمہ درج، پرنسپل گرفتار

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ چترال میں نجی اسکول کے پرنسپل کو بچوں پر وحشیانہ تشدد کرنے پر گرفتار کیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں