The news is by your side.

Advertisement

طالبان سے متعلق خفیہ رپورٹس، ڈومینک راب کا پاکستان کے حوالے سے اعتراف ‏

برطانوی وزیرخارجہ ڈومینک راب نے کہا ہے کہ طالبان سے متعلق انٹیلی جنس نےجو رپورٹس دی تھیں وہ غلط ‏ثابت ہوئیں، اعتراف کرتا ہوں 6 ماہ سے پاکستان یا افغان وزیرخارجہ کو فون نہیں کیا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق برطانوی وزیرخارجہ ڈومینک راب خارجہ امورکی سلیکٹ کمیٹی میں پیش ہوئے جس ‏میں انہیں افغانستان کی صورتحال پر سخت سوالات اور تنقید کا سامنا کرنا پڑا۔

ڈومینک راب نے کہا کہ ہم نےانخلا کی منصوبہ بندی جون میں شروع کردی تھی برطانوی انٹیلی جنس نے جو ‏رپورٹس دی تھیں وہ غلط ثابت ہوئیں رپورٹس تھیں کہ 2021میں کابل پرطالبان کےقبضےکاامکان نہیں۔

انہوں نے کہا کہ نیٹو اتحادیوں نے جو بھی اندازے لگائے وہ سب غلط ثابت ہوئے امریکاکتنےعرصےتک افغانستان ‏میں فوج رکھ سکتا تھا؟ اعتراف کرتاہوں ہمارےلیےکام کرنےوالےکچھ افغانوں کو چھوڑ دیا ہے۔

ڈومینک راب نےچھوڑےگئے افغان شہریوں سےمعافی کی پیشکش مسترد کرتے ہوئے کہا کہ ملکہ کی تصویر کو ‏طالبان نے پروپیگنڈا مقاصدکیلئےاستعمال کیا۔

کمیٹی ارکان نے ڈومینک راب پر بحران کی سنگینی نہ سمجھنے پر تنقید کی گئی اور کہا گیا کہ وہ مسائل جونیئر ‏ارکان پر چھوڑ دیتے ہیں۔

وزیرخارجہ ڈومینک راب نے اعتراف کیا کہ 6 ماہ سے پاکستان یا افغان وزیرخارجہ کوفون نہیں کیا۔ وزیرخارجہ ‏پاکستان سمیت افغانستان کے پڑوسی ممالک کادورہ کریں گے۔ دورےمیں افغانستان سےبرطانیہ کیلئےکام کرنے ‏والوں کے انخلاپربات ہوگی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں