The news is by your side.

Advertisement

سینیٹ اجلاس: نہتے کشمیریوں پر بھارتی جارحیت کے خلا ف مذمتی قرارداد پیش

اسلام آباد: سینیٹ اجلاس میں نہتے کشمیریوں پر بھارتی جارحیت کے خلاف مذمتی قرارداد پیش کردی گئی، مقبوضہ کشمیر اور افغانستان میں شہید ہونے والوں کے لیے دعائے مغفرت بھی کی گئی۔

تفصیلات کے مطابق چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کی زیر صدارت سینیٹ اجلاس کا انعقاد ہوا، کشمیریوں پر بھارتی جارحیت کے خلاف مذمتی قرارداد قائد حزب اختلاف شیری رحمان کی جانب سے پیش کی گئی۔

قرارداد میں کہا گیا ہے کہ بھارت کی جانب سے کشمیریوں پر مظالم بڑھتے جارہے ہیں، بھارت کی ایل او سی پر خلاف ورزیاں معمول بنتی جارہی ہیں، ایوان بھارتی جارحیت کی سخت الفاظ میں مذمت کرتا ہے، کشمیر کا مسئلہ اقوام متحدہ کی قرارداد کے مطابق حل کیا جائے۔

سینیٹ میں مشترکہ قرارداد پیش نہ کرنے پر ن لیگ کے رکن جاوید عباسی نے اعتراض کردیا، جاوید عباسی نے کہا کہ آج کی قرارداد مشترکہ پیش کی جاتی تو بہتر ہوتا، چیئرمین سینیٹ نے کہا کہ اعتراض صحیح ہے، ظفر الحق سے وائنڈ اپ کرالیتے ہیں۔

کشمیر میں بھارتی مظالم کے خلاف قرارداد پر بحث کے دوران چوہدری سرور نے کہا کہ کشمیری عوام کی قربانیوں کو سلام پیش کرتے ہیں، کشمیری آئینی حق مانگ رہے ہیں جو یو این نے ان کو دیا۔

مشاہد حسین سید نے کہا کہ سیننیٹ اجلاس کشمیر پر قرارداد سے شروع ہونا خوش آئند ہے، کشمیر کاز کو عالمی سطح پر اٹھانے میں لیگل ایشوز کو بھی دیکھنا ہوگا، آئندہ ہفتے لندن میں مودی اجلاس میں شرکت کرے گا، کشمیریوں اور سکھوں کا بڑا مظاہرہ بھی اس موقع پر ہوگا۔

بیرسٹر سیف نے کہا کہ کچھ بھی کرلیں بھارت کشمیریوں کو مارتا رہے گا، ہم صرف تقریریں کرکے گھر میں آرام سے سو جاتے ہیں، وزارت خارجہ اپنے اختیارات کا استعمال کرے۔

رحمان ملک نے کہا کہ بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں مظٓالم کی انتہا کردی ہے، بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی دہشت گرد ہیں، ماضی میں طالبان کی حمایت غلط اقدام تھا، مقبوضہ کشمیر میں ہندو انتہا پسندوں کو بسایا جارہا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں