The news is by your side.

’پلاسٹک مین‘ کی سڑکوں پر مٹر گشت

ڈاکار: سینیگال میں ’پلاسٹک مین‘ سڑکوں پر مٹر گشت کرنے لگا تو لوگ اسے نہایت دل چسپی سے دیکھنے اور سیلفیاں بنانے لگے۔

تفصیلات کے مطابق پلاسٹک ماحولیاتی آلودگی کے لیے ایک بڑا خطرہ قرار دیا جا چکا ہے، اس حوالے سے ماحولیاتی آلودگی اور شاپر بیگ کے خاتمے کے لیے سینگال کا ایک سابق فوجی اہل کار میدان میں آ گیا ہے۔

مودو فال نامی یہ شہری سر سے پاؤں تک پلاسٹک بیگز کا ہڈڈ کوٹ پہن کر سڑکوں پر نکلا، انھوں نے میڈیا سے گفتگو میں کہکا کہ پلاسٹک ہمارا ماحول برباد کردے گا، حکومت مزید اقدامات اٹھائے۔

انھوں نے کہا تمام پلاسٹک کی تھیلیاں جو پھینکی جاتی ہیں یا تو سمندر میں یا پھر کچرے کے ڈھیر میں تبدیل ہو جاتی ہیں، س لیے میں لوگوں کو متوجہ کرنے کے لیے تھیلوں کا بنا لباس پہنتا ہوں، تاکہ انھیں آگاہ کر سکوں کہ سینگال میں روزانہ 50 لاکھ سے زیادہ پلاسٹک کے تھیلے پھینکے جاتے ہیں۔

مودو فال نے کہا بہت سے لوگ سوچتے ہیں کہ میں پاگل ہوں لیکن میں اسے اپنے پیغام کو پہنچانے کا موقع سمجھتا ہوں۔

واضح رہے کہ سینگال میں 2020 میں شاپر کے استعمال پر پابندی کا بل پاس کیا گیا تھا، سینگال میں ایک سال کے دوران 20 لاکھ ٹن پلاسٹک ویسٹ جمع کیا جاتا ہے، صرف 9 ہزار ٹن پلاسٹک کو دوبارہ ری سائیکل کیا جاتا ہے، جب کہ باقی پلاسٹک سمندر اور سڑکوں کی زینت بنتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں