The news is by your side.

Advertisement

مشہور اداکارہ شبانہ اعظمی کو کون ‘‘منی’’ کے نام سے پکارتا تھا؟

کیفی اعظمی کا نام رومان پرور  شاعر کے طور پر ہی نہیں لیا جاتا بلکہ ان کی تخلیقات سے ان کے انسان دوست اور انقلابی نظریات کا اظہار بھی ہوتا ہے۔ انھوں نے اردو ادب کے دامن کو اپنی فکر اور مختلف اصنافِ سخن میں شعری اظہار سے مالا مال کیا۔ عالمی شہرت یافتہ اداکارہ شبانہ اعظمی انہی کی بیٹی ہیں۔

شبانہ اعظمی کا نام آرٹ فلموں کے ذریعے خود کو  منوانے والوں میں ممتاز ہے۔ وہ ایک باکمال اداکارہ  ہی نہیں بلکہ اپنے سیاسی و سماجی نظریات اور افکار کی وجہ سے بھی پہچانی جاتی ہیں۔

ان کے والد اور اردو زبان کے مشہور و معروف شاعر کیفی اعظمی انھیں ‘‘منی’’ کہتے تھے۔ دنیا بھر میں اپنے فن کی وجہ سے شہرت یافتہ یہ اداکارہ آج بھی گھر بھر کے لیے ‘‘منی’’ ہے۔ شبانہ اعظمی شبانہ اعظمی اپنے گھر کے ماحول اور اپنی پرورش کے حوالے سے بتاتی ہیں۔

‘‘میری پرورش جس ماحول میں  ہوئی وہاں ہر طرف اشتراکیت اور کارل مارکس کی باتیں ہوتی تھیں۔ والدین ترقی پسند تحریک سے وابستہ تھے۔ بچپن ہی سے گھر ادیبوں، شعرا اور دانش وروں کو قریب سے دیکھنے اور ان کی باتیں سننے کا موقع ملا جس نے میرے ذہن پر گہرے اثرات مرتب کیے۔ میں روایتی عورت کے مقابلے میں سماج کو الگ انداز سے دیکھنے کی عادی ہوگئی۔ وقت کے ساتھ ادب اور پرفارمنگ آرٹ میں دل چسپی بڑھتی چلی گئی اور پھر میں نے اپنے کیریر کا آغاز بھی اداکاری سے کیا۔ ابو کے لیے میں ہمیشہ ‘‘منی’’ رہی۔ وہ اسی پیار بھرے نام سے مجھے پکارتے تھے۔ آج بھی مجھے ان کی یاد بہت ستاتی ہے۔ میں نے ہمیشہ انھیں کاغذ قلم کے ساتھ ٹیبل پر جھکا ہوا پایا۔ مجھے کم عمری میں تو معلوم ہی نہیں تھا کہ میرے والد کا کام کیا ہے۔ کچھ شعور آیا تو جانا کہ وہ ایک شاعر ہیں اور فلمی صنعت میں ان کا بہت نام اور مقام ہے۔’’

شبانہ اعظمی کی چند مشہور  فلمیں شطرنج کے کھلاڑی،  سوامی، منڈی،  فقیرا، پرورش، امر اکبر انتھونی ہیں۔ شبانہ اعظمی نے ہندی سنیما اور آرٹ فلموں کے ساتھ ساتھ بین الاقوامی فلموں کے لیے بھی اداکاری کی اور کام یاب رہیں۔ متعدد ایوارڈز اپنے نام کرنے والی شبانہ اعظمی کی شادی معروف گیت نگار جاوید اختر سے ہوئی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں