اپوزیشن اپنی مرضی کا کوئی بھی چیئرمین پی اے سی نامزد کردے: شاہ محمود قریشی -
The news is by your side.

Advertisement

اپوزیشن اپنی مرضی کا کوئی بھی چیئرمین پی اے سی نامزد کردے: شاہ محمود قریشی

اسلام آباد: وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ اپوزیشن سے درخواست ہے اپنی مرضی کا کوئی بھی چیئرمین پی اے سی نامزد کر دیں۔ موجودہ قائد حزب اختلاف نیب کے کیسز سے دو چار ہیں، وہ کیسے پی اے سی چیئرمین بن سکتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے قومی اسمبلی کے اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ کہ پروڈکشن آرڈر پر فیصلہ اسپیکر قومی اسمبلی نے ہی فرمانا ہے، ماضی میں بھی آپ نے پروڈکشن آرڈر جاری کیے ہیں، یقیناً پروڈکشن آرڈر پر آپ کا فیصلہ ہم تہہ دل سے قبول کریں گے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ یہ ایوان ہم سب کا ہے، اس کے قوانین کا احترام ہم سب پر لازم ہے۔ حالات بدلتے رہتے ہیں، اپوزیشن حکومت میں بیٹھتی رہتی ہے۔ بحیثیت پارلیمنٹ رکن ہمیں ایک فیصلہ کرلینا چاہیئے۔

انہوں نے کہا کہ 2 نکتہ نظر پر منتخب کیا جاتا ہے لیکن ہمیں ایک نکتہ نظر پر آنا ہوتا ہے، تسلیم کرتا ہوں حکومت کی ذمہ داری زیادہ ہے، کشادہ ذہن ہونا چاہیئے۔ ایوان میں روزانہ ہنگامہ کھڑا کردیں تو کسی کا فائدہ نہیں ہوگا۔ نظام نہیں چلے گا تو ذمہ داری سب کی ہے، اپوزیشن بری الذمہ نہیں۔

وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کو انتخابات 2018 پر اعتراض تھا، اپوزیشن نے اپنے اعتراضات کو اٹھایا جس پر ایک کمیشن بنایا گیا۔ آئییں مل کر آگے بڑھتے ہیں، عوام کے لیے پاکستان کے لیے ساتھ چلتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہم اپوزیشن میں تھے تو احتجاج ریکارڈ کروایا لیکن حکومت نے کشادہ ذہن کا مظاہرہ نہیں کیا۔ گزشتہ حکومت کشادہ ذہن کا مظاہرہ کرتی تو آج صورتحال یکسر تبدیل ہوتی۔ اسٹینڈنگ کمیٹیوں کا بننا پارلیمنٹ کی ضرورت ہے۔

شاہ محمود قریش نے کہا کہ رولز سے ہٹ کر روایات نے جنم لیا کہ پی اے سی کا چیئرمین قائد حزب اختلاف ہونا چاہیئے، موجودہ قائد حزب اختلاف نیب کے کیسز سے دو چار ہیں، وہ کیسے پی اے سی چیئرمین بن سکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اپوزیشن سے درخواست ہے اپنی مرضی کا کوئی بھی چیئرمین پی اے سی نامزد کر دیں۔ آئیں مل کر ایسا فیصلہ کریں جس سے یہ ایوان مذاق نہ بن جائے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں