28.6 C
Ashburn
بدھ, مئی 22, 2024
اشتہار

نوٹس میں عمران خان کی گرفتاری کا حکم نہیں ہے، شاہ محمود قریشی

اشتہار

حیرت انگیز

پی ٹی آئی رہنما شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ تمام کارکنان حوصلہ رکھیں اسلام آباد پولیس کا نوٹس دیکھ اور وصول کرلیا اس میں گرفتاری کا حکم نہیں ہے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق عمران خان کی گرفتاری کیلیے اسلام آباد پولیس ٹیم کے زمان پارک لاہور پہنچنے اور نوٹس وصول ہونے کے بعد پی ٹی آئی کے مرکزی رہنما شاہ محمود قریشی نے دوٹوک انداز میں کہا ہے کہ عدالتی نوٹس میں گرفتاری کا حکم نہیں ہے۔ تمام کارکنان حوصلہ رکھیں، نوٹس دیکھ اور وصول کرلیا ہے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ وکلا سے بھی مشاورت کریں گے اور نوٹس پر قانونی کارروائی کریں گے۔ عمران خان سیکیورٹی رسک کے باوجود لاہور ہائیکورٹ پیش ہوئے ہیں۔ گھبرانے کی ضرورت نہیں محتاط رہنے کی ضرورت ہے۔ ہم ایک سیاسی جماعت ہیں ہمارا سیاسی ردعمل بھی ہوگا۔ عمران خان سے مشاورت کے بعد اپنا ردعمل دیں گے۔

- Advertisement -

ان کا کہنا تھا کہ عمران خان کی جان کوخطرہ تھا اور ہے۔ خدشہ ہے کہ عمران خان کے قتل کا پلان بنایا جا رہا ہے۔ ان پر پہلے قاتلانہ حملہ ہوچکا ہے اور عین ممکن ہے کہ دوبارہ بھی ایسا ہو۔ عمران خان ہر جگہ پیش ہوتے رہے ہیں، صرف سیکیورٹی کا مسئلہ ہے، لیڈر شپ نے چیئرمین کو محفوظ کرنے کے لیے اپنا لائحہ عمل مرتب کیا ہے۔

پی ٹی آئی رہنما نے مزید کہا کہ پاکستان معاشی بحران اورسیاسی بھونچال کا شکار ہے۔ عمران خان نے کل قوم کو اپنا بڑا پن دکھایا اور ویڈیو لنک خطاب میں خود پر قاتلانہ حملہ کرنے والوں کو معاف کرنے کا اعلان بھی کیا۔ اگر آپ نے معیشت کو سنبھالا دینا ہے تو سوچ کا انداز بدلنا ہوگا۔ دہشتگردی کا مقابلہ کرنا ہے تو اپنے فیصلوں پر نظر ثانی کرنا ہوگی۔

یہ بھی پڑھیں: عمران خان کو گرفتار کرنے کا حکم ہے، آئی جی اسلام آباد

ان کا کہنا تھا کہ ہم اپنے اصولوں پر سمجھوتہ نہیں کریں گے۔ 30 اپریل کو پنجاب میں انتخابات ہونے ہیں۔ کل گورنر کے پی کو ہر صورت انتخابات کی تاریخ دینی ہے، اگر گورنر کے پی تاریخ نہیں دیتے تو قانون کی گرفت آسکتی ہے۔ پولیس اور حکومت بھی کنفیوژڈ ہے۔ ان کا یکے بعد دیگرے ہر منصوبہ ناکام ہوا ہے۔ یہ کوئی نہ کوئی فرار کا راستہ اپنانا چاہتے ہیں۔

Comments

اہم ترین

ویب ڈیسک
ویب ڈیسک
اے آر وائی نیوز کی ڈیجیٹل ڈیسک کی جانب سے شائع کی گئی خبریں

مزید خبریں