The news is by your side.

Advertisement

“اتنا جلد فیصلہ تو پنچائیت میں نہیں ہوتا”

اسلام آباد: وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری اور وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے سیاسی ابلاغ شہباز گل نے لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے پر اپنے ردعمل کا اظہار کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری اپنے بیان میں وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہا کہ شہباز شریف اربوں روپے کی منی لانڈرنگ میں ملوث ہیں، شہباز شریف کو باہر جانےکی اجازت قانون کیساتھ مذاق ہے۔

فواد چوہدری نے لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کو عجلت میں دیا گیا فیصلہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اتنا جلد فیصلہ تو پنچائیت میں نہیں ہوتا اس طرح سے فرار ہونا بدقسمتی ہوگی، اس سے پہلے وہ نواز شریف کی واپسی کی گارنٹی دے چکے،سوال یہ ہے کہ اس گارنٹی کا کیا بنا؟۔

وفاقی وزیر اطلاعات نے اپنے ٹوئٹ میں کہا کہ لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کیخلاف تمام قانونی راستے اختیار کریں گے،ہمارے نظام عدل کی کمزوریوں کی وزیراعظم کئی بار نشاندہی کرچکے، اس کے باوجود اپوزیشن اصلاحات پر تیار نہیں، اس کی بڑی وجہ یہ ہے کہ بوسیدہ نظام سے انکے مفاد وابستہ ہیں۔

اپنے سلسلہ وار ٹوئٹ میں فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ شہباز شریف نے نواز شریف کے باہر جانے کیلئے یہ گارنٹی عدالت میں جمع کروائی تھی، اب بجائے اس کے کہ کہ شہباز شریف کو جعلی گارنٹی دینے پر نوٹس کیا جاتا نواز شریف کو واپس بلایا جاتا خود شہباز شریف کو باہر بھیجا جا رہا ہے۔

دوسری جانب وزیراعظم کے معاون خصوصی شہبازگل نے بھی شہباز شریف کی بیرون ملک روانگی کی اجازت کے فیصلے کو حیران کن فیصلہ قرار دیا اور کہا کہ پہلے بھائی کی جھوٹی ضمانت دی اسے باہر بھاگنے میں مدد دی، پہلے بھائی کی جھوٹی ضمانت دی اسے باہر بھاگنے میں مدد دی، کیا انہیں مفرور کی معاونت میں اندر نہیں ہونا چاہیے تھا،35سال کی حکومت میں ایک اسپتال ایسا نہیں جہاں علاج ہو سکے۔

واضح رہے کہ اب سے کچھ دیر قبل لاہور ہائی کورٹ نے شہباز شریف کو بڑا ریلیف دیتے ہوئے ان کی بیرون ملک جانے کی درخواست کو منظور کیا تھا،لاہور ہائی کورٹ نے اپنے مختصر فیصلے میں کہا کہ شہباز شریف کو باہر جانے کی مشروط اجازت آٹھ مئی سے پانچ جولائی تک ہوگی۔

 

Comments

یہ بھی پڑھیں