The news is by your side.

Advertisement

شاہد خاقان کی ضمانت میں توثیق، نام ای سی ایل میں شامل کرنے کا عدالتی حکم

کراچی: سابق ایم ڈی پی ایس او شیخ عمران کی غیر قانونی تعیناتی سے متعلق ریفرنس میں سندھ ہائی کورٹ نے تفصیلی تحریری فیصلہ جاری کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائی کورٹ نے شاہد خاقان عباسی و دیگر کی درخواست ضمانت پر تفصیلی فیصلہ جاری کر دیا، عدالت نے شاہد خاقان سمیت تمام ملزمان کی ضمانت میں توثیق کر دی۔

تحریری فیصلے میں عدالت نے یہ حکم بھی دیا کہ تمام ملزمان کے نام فوری طور پر ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں شامل کیے جائیں۔ واضح رہے کہ عدالت نے تمام ملزمان کی ضمانت 5،5 لاکھ روپے میں منظور کی تھی۔

عدالتی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ ضمانت قبل از گرفتاری میں ثابت کرنا ہوتا ہے کہ تفتیش بد نیتی پر مبنی ہے، دیکھنے میں آتا ہے شاہد خاقان موجودہ حکومت پر کھلم کھلا تنقید کرتے ہیں، شاہد خاقان کے خلاف پہلے بھی اسلام آباد میں ریفرنس دائر ہے، وہ اسلام آباد ریفرنس میں 7 ماہ جیل میں رہ چکے ہیں۔

شاہد خاقان عباسی کیخلاف ایل این جی ضمنی ریفرنس دوبارہ دائر

تحریری فیصلے میں عدالت کا کہنا ہے کہ اس بات کو مسترد نہیں کیا جا سکتا کہ نیب نے سیاسی دباؤ میں لانے کے لیے ریفرنس بنایا ہو، خواجہ برادران کیس میں سپریم کورٹ کہہ چکی ہے کہ نیب یک طرفہ کارروائی کر رہا ہے۔

فیصلے کے مطابق یہ سوال کیا گیا تھا کہ اکثریتی پارٹی کے خلاف اب تک کتنے ریفرنس فائل کیے جا چکے ہیں، نیب حکام اور پراسیکیوٹر اس سوال کا جواب نہیں دے سکے، نیب نے تفتیش میں سابق وزیر اعظم نواز شریف کو شامل نہیں کیا، دل چسپ بات یہ ہے کہ ان الزامات کو ماتحت عدالت میں ریفرنس کا حصہ نہیں بنایا گیا۔

بعد ازاں، عدالت نے فیصلہ دیا کہ شاہد خاقان سمیت تمام ملزمان کی ضمانت میں توثیق کی جاتی ہے، جب کہ تمام ملزمان کے نام فوری طور پر ای سی ایل میں شامل کیے جائیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں