The news is by your side.

Advertisement

ڈیجیٹل کرنسی پر پابندی : وفاقی حکومت، اسٹیٹ بینک اور ایف آئی اے سے تفصیلات طلب

کراچی : سندھ ہائی کورٹ نے ڈیجیٹل کرنسی پر پابندی کےخلاف درخواست پر وفاقی حکومت، اسٹیٹ بینک اور ایف آئی اے سے 5نومبر کوتفصیلات طلب کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائی کورٹ میں ڈیجیٹل کرنسی پر پابندی کےخلاف درخواست پرسماعت ہوئی ، کرپٹو کرنسی کی اجازت نہ دینے پر عدالت نے اسٹیٹ بینک آف پاکستان پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ڈیجیٹل کرنسی جیسی جدید ٹیکنالوجی سے فوائد حاصل کیوں نہیں کیے جارہے؟ دنیا جدید ٹیکنالوجی میں بہت آگے چلی گئی ہے اورہم وہیں کھڑےہیں، دنیا میں کرپٹو کرنسی چل رہی ہے پاکستان میں کیوں بند ہے۔

وکیل اسٹیٹ بینک نے بتایا کہ پاکستان میں کرپٹو کرنسی پرپابندی نہیں ، اسےریگولر نہیں کیاگیا، جس پر جسٹس محمد اقبال کلہوڑو کا کہنا تھا کہ اب تک کرپٹو کرنسی کو ریگولر کیوں نہیں کیا گیا، اگر کرنسی میں کام کرنا غیر قانونی نہیں تواجازت کیوں نہیں دی جارہی؟

عدالت نے کہا کہا کرپٹو کرنسی سے متعلق عالمی قوانین پیش کیے جائیں، درخواست میں فریق اسٹیٹ بینک ہے اسے جواب دینا ہوگا، درخواست میں حتمی فیصلہ جاری کریں گے، ضمنی ریلیف نہیں دے سکتے۔

اسٹیٹ بینک نے تحریری جواب میں ملک میں ڈیجیٹل کرنسی کے اطلاق کی مخالفت کرتے ہوئے کہا ڈیجٹل کرنسی کے حوالے سے صارفین کو ایڈوئزری جاری کر چکا ہے، ڈیجیٹل کرنسی میں لین دین سے متعلق کوئی لیگل ٹینڈر نہیں کیا گیا۔

سندھ ہائی کورٹ نے وفاقی حکومت، اسٹیٹ بینک اور ایف آئی اے سے 5نومبر کوتفصیلات طلب کرلیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں