The news is by your side.

اسکول فیس میں 5 فیصد سے زائد اضافہ، ڈی جی پرائیویٹ اسکولز سمیت 4اسکولوں کو توہین عدالت کا نوٹس جاری

کراچی : اسکول فیس میں پانچ فیصد سے زائد اضافے کے معاملے پر سندھ ہائی کورٹ نے ڈی جی پرائیویٹ اسکولز سمیت 4 اسکولوں کوتوہین عدالت کے نوٹس  جاری کردیئے، عدالت نے تمام اسکولوں کو حکم نامے پر مکمل عمل کرنے کا حکم دیتے ہوئے سندھ حکومت سےفیس اسٹرکچر کاریکارڈ بھی مانگ لیا۔

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائی کورٹ میں پرائیویٹ اسکولوں کی جانب سے فیس میں پانچ فیصد سے زائد اضافے سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی ، سماعت میں عدالتی حکم عدولی پر سندھ ہائی کورٹ نے ڈی جی پرائیویٹ اسکولز اور چار اسکولوں کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کردیا۔

والدین کی جانب سے دائر توہین عدالت کی درخواست پر وکیل نے فل بینچ کو بتایا کہ عدالتی حکم کے باوجود اسکولز پانچ فیصد سے زائد اضافہ کررہے ہیں جبکہ ڈی جی اسکولز کے مطابق فیس اسٹرکچرز کا ریکارڈ بارش میں ضائع ہوگیا ہے۔

عدالت نے تمام اسکولوں کو عدالتی حکم پر مکمل عمل درآمد کا حکم دیا اور سندھ حکومت سے منظورشدہ فیس اسٹرکچرکاریکارڈ بھی طلب کرلیا جبکہ ڈی جی پرایئویٹ اسکولز منسوب صدیقی کو انیس نومبر کو ریکارڈ سمیت پیش ہونے کا حکم دیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ 3 ستمبرکو سندھ ہائی کورٹ کی جانب سے جاری فیصلے میں کہا گیا تھا کہ نجی اسکولوں کو 5 فیصد سے زیادہ فیس بڑھانے کا اختیارنہیں ہے۔ عدالت نے نجی اسکولوں کو 5 فیصد سے زائد فیس وصولی سے روک دیا تھا۔

واضح رہے کہ والدین کے وکلاء کا موقف تھا کہ اسکول اساتذہ کی تنخواہیں مجموعی اخراجات کا 50 فیصد بھی نہیں، اخراجات کے ساتھ اسکول کی آمدنی بھی دیکھنی چاہیے، آئین کا آرٹیکل 38 تمام فریقین پرلاگو ہوتا اور سپریم کورٹ بھی قرار دے چکی کہ نجی اسکول منافع بخش کاروبارمیں آتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں