The news is by your side.

Advertisement

آسٹریلیا کے جنگلات سے ملی عجیب الخلقت مخلوق

میلبورن : آسٹریلیا کے جنگل میں 5سال سے بے یارو مددگار گھومنے والی بھیڑ نے عجیب شکل اختیار کرلی، پہلی نظر دیکھنے والے اسے عجیب الخلقت مخلوق تصور کرتے ہیں۔

آسٹریلیا کے بیابان میں گھومنے والی ایک جنگلی بھیڑ پر لدی 35 کلوگرام وزنی اون پاچ سال بعد ہٹالی گئی یہ اون پانچ سال تک نہ کاٹنے کی وجہ سے اس کے جسم پر موجود تھی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارےکے مطابق باراک نامی اس بھیڑ کا جسم سالوں سے صفائی نہ ہونے کے باعث مٹی اور گرد سے بری طرح اٹ چکا تھا کیونکہ یہ بھیڑ مقامی افراد کی نظروں سے اوجھل رہی۔

ایڈگر مشن فارم سینکچوری نامی جانوروں کی پناہ گاہ نے سوشل میڈیا  پر بتایا کہ اس بھیڑ کو کٹورین اسٹیٹ کے ایک جنگل میں پایا گیا اور میلبورن شہر کے شمال میں واقع پناہ گاہ لے جایا گیا۔

پناہ گاہ کی بانی پیم آہرن نے آسٹریلیوی خبر رساں اداے کو بتایا کہ انہیں یقین نہیں آرہا تھا کہ اُون کی اس موٹی تہہ کے نیچے واقعی ایک زندہ بھیڑ تھی۔ انہوں نے بتایا کہ اس بھیڑ کا اونی کوٹ تقریباً پانچ سال سے نہیں اتارا گیا تھا۔

دنبوں کے جسم سے اگر اُون نہ اتاری جائے تو انہیں چلنے میں مشکل پیش آتی ہے اور اگر ایک سال تک ان پر سے صفائی نہ کی جائے تو وہ خصوصاً آسٹریلیا کے جنگلات میں زیادی دیر زندہ نہیں رہ سکتے۔

واضح رہے کہ اتنے زیادہ وزن میں زندہ رہنے کے باوجود “باراک” ورلڈ ریکارڈ نہ قائم کر سکی کیونکہ اس سے قبل سال2016 میں کرس نامی بھیڑ کے جسم سے 41 کلو بھاری اون ہٹائی گئی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں