The news is by your side.

Advertisement

لندن میں گرفتار شخص فرار ہوکر برطانیہ گیا اور پیسہ کاروبار پر لگایا، شہزاد اکبر

اسلام آباد: معاون خصوصی احتساب شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ لندن میں گرفتار شخص نے پیسہ برطانیہ میں کاروبار پر لگایا، گرفتار شخص نے برطانوی قانون توڑا اور منڈی لانڈرنگ کی، اس کے اثاثے ضبط ہوئے تو کلیم فائل کریں گے، ہماری طرف سے ملزم کی برطانیہ بدری کی درخواست دائر ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اے آر وائی نیوز کے پروگرام پاور پلے میں گفتگو کرتے ہوئے کیا، شہزاد اکبر نے کہا کہ منی لانڈرنگ کے تانے بانے دہشت گردی کی فنانسنگ سے ملتے ہیں، کسی مشیر نے خود پر ریفرنس کے بعد استعفیٰ دیا، آج تک کسی دور میں نہیں ہوا۔

لندن میں گرفتار شخص کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ قانونی طریقے سے تفتیش مکمل ہونے تک گرفتار شخص کی شناخت ظاہر نہیں کی جاتی، آج کی کارروائی حکومت پاکستان اور برطانیہ میں معاہدے کی توثیق ہے، برطانیہ کو 8 ملین پاؤنڈ تک کی پراپرٹی سے متعلق ثبوت فراہم کیے گئے تھے۔

مزید پڑھیں: برطانیہ میں منی لانڈرنگ کے الزام میں پاکستانی سیاسی شخصیت کی گرفتاری و رہائی

شہزاد اکبر نے کہا کہ موجودہ حکومت پر کسی قسم کا کوئی دباؤ نہیں ہے، وائٹ کالر کرائم کو ڈیل کرنے کے لیے تفتیش جدید طریقے سے اپنانا ہوں گے، کرپشن کے خلاف ہماری صلاحیتوں میں اضافہ بھی ضروری ہے۔

معاون خصوصی احتساب کے مطابق پشاور میں حوالہ ہنڈی پر کارروائی میں 50 سے زائد لوگ گرفتار ہوئے، گرفتار ملزمان سے 28 ملین غیرملکی کرنسی برآمد ہوئی۔ ایف آئی اے، اینٹی کرپشن حکام پشاور میں کارروائی کررہے ہیں، حوالہ ہنڈی پر قائم اٹارنی جنرل کی سربراہی میں کمیٹی جلد ڈرافٹ لائے گی، حوالہ ہنڈی کرنے والے کیش ساتھ نہیں رکھتے موبائل کے ذریعے کام کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ موثر تفتیش عدالت میں پیش کریں گے تو نظر آئے گا کام ہوا ہے، کابینہ نے احتساب یونٹ بنایا ہے مگر ابھی ہمیں بجٹ نہیں دیا گیا، احتساب کا یونٹ حب الوطنی کے جذبے کے ساتھ کام کررہا ہے، احتساب یونٹ کے کچھ لوگوں نے ہمیں ابھی جوائن کرنا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں