The news is by your side.

Advertisement

سانحہ مچھ: شیخ رشید کے مظاہرین سے مذاکرات ناکام، دھرنا جاری رکھنے کا اعلان

کوئٹہ: مچھ بلوچستان میں گیارہ کان کنوں کے لرزہ خیز قتل کے بعد دھرنا دینے والے مظاہرین کے ساتھ وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید کے مذاکرات ناکام ہو گئے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق سانحہ مچھ کے مظاہرین نے دھرنا ختم کرنے سے انکار کر دیا، مظاہرین نے مطالبہ کیا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان دھرنے میں خود تشریف لائیں، تب تک دھرنا جاری رہے گا۔

وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے کوئٹہ دھرنے کے شرکا سے خطاب میں کہا سانحہ مچھ پر شرمندہ ہوں، یقین دلاتا ہوں دہشت گرد نہیں بچیں گے، متاثرین کی مالی مدد بھی کی جائے گی اور ان کو 25،25 لاکھ روپے دیے جائیں گے۔

شیخ رشید نے مظاہرین سے کہا کہ 3 سے 4 دن میں ان کی وزیر اعظم سے ملاقات کراؤں گا، واقعے سے متعلق جوڈیشل کمیٹی کا بھی اعلان کرتا ہوں، انھوں نے مزید کہا کہ آپ کا پیغام وزیر اعظم تک پہنچاؤں گا، لواحقین سے درخواست ہے کہ شہدا کی تدفین کر دیں۔

11 کان کنوں کا قتل : سانحہ مچھ کا مقدمہ نامعلوم افراد کے خلاف درج

قبل ازیں، وزیر داخلہ شیخ رشید سانحہ مچھ کے لواحقین کے دھرنے میں پہنچے تو ان کے ہمراہ ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی قاسم سوری، صوبائی وزیر داخلہ میر ضیا لانگو بھی موجود تھے، انھوں نے کا کہا کہ وزیر اعظم عمران خان نے مجھے فوری کوئٹہ پہنچنے کی ہدایت کی تھی، یقین دلاتا ہوں کہ حملہ آور بچ نہیں سکیں گے، سانحہ مچھ متاثرین کو صوبائی حکومت 15 لاکھ، وفاق 10 لاکھ روپے دے گا۔

انھوں نے مظاہرین سے خطاب میں کہا کہ دہشت گرد مچھ پر 4 بار حملہ کر چکے ہیں، یقین دلاتا ہوں کہ یہ مجرم نہیں بچنے والے، لواحقین کے جو مطالبات ہیں وزیر اعظم کے سامنے رکھیں گے، وزیر اعظم نے کہا تھا کہ میرا جہاز لے کر جاؤ اور تعزیت کرو، وزیر اعظم کا خصوصی پیغام لے کر یہاں آیا ہوں، امید ہے آپ لوگ وزیر اعظم کی درخواست کو رد نہیں کریں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں