The news is by your side.

Advertisement

نیوزی لینڈ کو بھاگنے نہیں دینگے، چھوڑنا انڈیا کو بھی نہیں، شعیب اختر

کراچی : پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق فاسٹ بولر شعیب اختر نے کہا ہے کہ ہمیں بھارت سے زیادہ غصہ نیوزی لینڈ ٹیم پر ہے، لیکن بھارت کو بھی نہیں چھوڑیں گے۔

یہ بات انہوں نے ایک بھارتی نجی ٹی وی چینل پر دوران پروگرام گفتگو کرتے ہوئے کہی، اس موقع پر ان کے ساتھ سابق بھارتی اسپنر ہربھجن سنگھ بھی موجود تھے۔

راولپنڈی ایکسپریس شعیب اختر نے اپنی گفتگو میں کہا کہ ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ میں پاکستان کا سارا فوکس نیوزی لینڈ ٹیم سے میچ پر ہے اس لیے بھارت پر فوکس ذرا کم ہے۔

انہوں نے کہا کہ نیوزی لینڈ کی ٹیم جو ی ہمارے ہاں سے بھاگ کر گئی ہے ہمارا اصل غصہ ان پر ہے اور اسی لیے ہم نے انہیں ورلڈ کپ میں نہیں چھوڑنا۔

 شعیب اختر نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری اپنے پیغام میں بھی کہا کہ نیوزی لینڈ کو نہیں بھاگنے دینا اب لیکن چھوڑنا بھارت کو بھی نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ بھارت کے پاس شاندار کھلاڑی ہیں لیکن ٹی ٹوئنٹی میں پیشگوئی نہیں کی جاسکتی، بھارتی کرکٹ ٹیم پاکستان سے بہتر ہے لیکن پاکستان جارحانہ مزاج کی کرکٹ کھیلےگا۔

شعیب اختر نے کہا کہ پاکستان ورلڈکپ میں بھارت سے بہتر ٹیم رہی ہے، ورلڈکپ میچوں میں بھارت نے پاکستان سےبہتر پریشر ہینڈل کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ میرے کیریئر کے دنوں میں پاکستان کے پاس بھارت سے بڑے کھلاڑی ہوا کرتے تھے۔ایک انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ کوہلی پر بابر اعظم سے زیادہ پریشر ہوگا کیونکہ میچ میں دبئی اسٹیڈیم پورا نیلا ہوگا۔

براڈ کاسٹرز بھی بھارت کے ہیں، لہٰذا اگر ہم ہار بھی جاتے ہیں تو زیادہ مسئلہ نہیں ہوگا اصل مسئلہ بھارت کو ہوگا کیونکہ ان کے پاس اس میچ کو کھونے کے ساتھ ساتھ کھونے کے لیے اور بھی کچھ ہے۔

شعیب اختر نے بھارت کے اسٹار بیٹسمین اور کپتان کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ قسمت کوہلی کے ساتھ نہیں ہے۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ یہ ٹی 20 ورلڈ کپ کوہلی کا بطور کپتان آخری ٹورنامنٹ ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں