The news is by your side.

Advertisement

گنگا کنارے کی ایک اور دل دہلا دینے والی ڈرون فوٹیج سامنے آ گئی

لکھنؤ: بھارت میں گنگا کنارے کی ایک اور دل دہلا دینے والی ڈرون فوٹیج سامنے آ گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی ریاست اترپردیش کے علاقے پریاگ راج میں دریائے گنگا کے کنارے کرونا سے مرنے والوں کا قبرستان بن گیا ہے، ریت میں سیکڑوں مردوں کو دفنا دیا گیا ہے، اس کی ایک ڈرون فوٹیج نے دیکھنے والوں کے دل دہلا دیے۔

ڈرون فوٹیج نے افسوس ناک مناظر دکھائے، جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ دریا کنارے ہر طرف قبریں ہی قبریں ہیں، قبروں کے اوپر نارنجی چادریں بھی چڑھائی گئی ہیں، جس سے نارنجی قبرستان کا منظر بنا دکھائی دیتا ہے۔

اترپردیش میں گنگا کنارے رہائش رکھنے والے شہریوں کا کہنا ہے کہ لوگ اپنے پیاروں کو اب دفن کرنے لگے ہیں، کیوں چتا جلانے کے لیے انھیں جگہ نہیں مل رہی، رواں ہفتے الجزیرہ نے رپورٹ کیا تھا کہ بہت سارے لوگ آخری رسوم کے لیے لکڑیاں بھی خرید نہیں پا رہے ہیں۔

اس سے قبل بے شمار جلتی چتاؤں کے ڈرون مناظر بھی سامنے آ چکے ہیں، حالیہ دنوں میں کرونا سے مرنے والے لوگوں کی لاشیں دریا میں بہتی ہوئی بھی ملی تھیں، مقامی لوگوں کا کہنا تھا کہ وہ صورت حال سے دہشت زدہ ہیں، کتے لاشوں کو بھنبھوڑ رہے ہیں اور ان کی ہڈیاں اور گوشت کے ٹکڑے رہائشی علاقوں میں پائے جاتے ہیں، جب کہ حکومت کچھ نہیں کر رہی ہے۔

ڈونگری گاؤں کے ایک دیہاتی نے ٹیلی گراف کو بتایا تھا کہ یہاں روزانہ تقریباً چالیس لاشیں لائی جاتی ہیں، یا تو انھیں دفنایا جاتا ہے یا گنگا کنارے ایسے ہی چھوڑ دیا جاتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں