سندھ اسمبلی کا بجٹ اجلاس ہنگامے کی نذر، حکومتی اور اپوزیشن ارکان کا شور شرابا -
The news is by your side.

Advertisement

سندھ اسمبلی کا بجٹ اجلاس ہنگامے کی نذر، حکومتی اور اپوزیشن ارکان کا شور شرابا

کراچی: سندھ اسمبلی کا بجٹ اجلاس ہنگامے کی نذر ہو گیا، حکومتی اور اپوزیشن ارکان کے شور شرابے سے ایوان میں کان پڑی آواز سنائی نہیں دی۔

تفصیلات کے مطابق سندھ اسمبلی کا بجٹ اجلاس حکومتی اور اپوزیشن ارکان کے شور شرابے کی نذر ہو گیا، شہد کی بوتلوں اور زیتون کے تیل کا بھی ذکر نکل آیا۔

وسیم قریشی نے کہا کہ سندھ حکومت پانی کے لیے پیسے رکھے تو شہد نکل آتا ہے ا ور تھر کے لیے پیسے رکھے تو زیتون نکل آتا ہے۔

سندھ حکومت پانی کے لیے پیسے رکھے تو شہد نکل آتا ہے: وسیم قریشی

ایم کیو ایم کے رکن صوبائی اسمبلی وسیم قریشی کا کہنا تھا کہ جب تک شہد اور زیتون کی بوتلیں ملتی رہیں گی تب تک سندھ ترقی نہیں کرے گا۔

آصف جتوئی کی جانب سے پی پی شریک چیئرمین آصف علی زرداری پر تنقید کے بعد پی پی ارکان نے شدید احتجاج کیا، ایوان مچھلی بازار بن گیا۔ اسپیکر آغا سراج درّانی نے کہا کہ لیڈر پر بات کریں گے تو آپ کے لیڈر پر بھی بات ہوگی، مجھ پر نہ چیخیں، میں اس کا اثر نہیں لوں گا۔


یہ بھی پڑھیں:  صوبوں کومزید خود مختاربناناچاہتے ہیں: وزیراعظم عمران خان


واضح رہے کہ آج وزیرِ اعظم عمران خان کی زیرِ صدارت مشترکہ مفادات کونسل کا پہلا اجلاس منعقد ہوا جس میں سات نکاتی ایجنڈے پر غور کیا گیا، اجلاس میں چاروں صوبوں کے وزرائے اعلیٰ نے شرکت کی۔

اس موقع پر چاروں صوبائی وزرائے اعلیٰ نے وزیرِ اعظم کو صوبائی معاملات سے آگاہ کیا، وزیرِ اعظم کا کہنا تھا کہ حکومت صوبوں کو مزید خود مختار بنانا چاہتی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں