The news is by your side.

Advertisement

سندھ حکومت نے ٹرانسپورٹرز کو کرایوں میں فوری اضافے سے روک دیا

پبلک ٹرانسپورٹرز کی جانب سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے بعد کرایوں کے مطالبے کے اضافے پر صوبائی وزیر ٹرانسپورٹ نے کہا ہے کہ جب تک فیصلہ نہ ہو ٹرانسپورٹرز کرایوں میں اضافہ نہ کریں۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق صوبائی وزیر ٹرانسپورٹ کا پبلک ٹرانسپورٹ کی نمائندہ تنظیموں کے ساتھ اجلاس ہوا جس میں ٹرانسپورٹرز نے پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافے کے پیش نظر لوکل کرایوں میں فوری اضافہ کرنے کی اپیل کی اور کہا کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اتنے بڑے اضافے کے بعد روٹس پر گاڑیاں نقصان میں چل رہی ہیں۔

ذرائع نے اس حوالے سے اے آر وائی نیوز کو بتایا کہ اس موقع پر صوبائی وزیر شرجیل انعام میمن نے ٹرانسپورٹرز کو تمام مسائل کے حل کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ ہم جانتے ہیں کہ پٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں بڑھ گئی ہیں لیکن حکومت عوام پر بوجھ نہیں ڈالنا چاہتی، یہ معاملہ سندھ کابینہ کے آئندہ اجلاس میں اٹھائیں گے، جب تک اس حوالے سے کوئی فیصلہ نہ ہو تب تک ٹرانسپورٹرز کرایوں میں اضافہ نہ کریں۔

اجلاس میں پبلک ٹرانسپورٹ کے کرایوں میں اضافے سمیت روٹس کے اجازت ناموں، گاڑیوں کی فٹنس اور کراچی شہر کو جدید ٹرانسپورٹ کی سہولت فراہم کرنے پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا، انٹر سٹی ، انٹرا سٹی اور انٹرا پراونس سمیت دیگر ایسوسی ایشن نے صوبائی وزیر کو اپنے مسائل سے آگاہ کیا۔

صوبائی وزیر ٹرانسپورٹ نے کہا کہ دھوئیں والی گاڑیوں سے ماحولیاتی آلودگی میں اضافہ ہو رہا ہے، یکم اگست تک ٹرانسپورٹرز اپنی گاڑیاں درست کرالیں، دی گئی مہلت کے بعد ایسی گاڑیاں کو سڑکوں پر آنے کی اجازت نہیں ہوگی، ایسی گاڑیاں جو سڑکوں پر لانے کے قابل نہیں ان کے خلاف سخت کارروائی کریں گے۔

صوبائی وزیر نے سیکریٹری ٹرانسپورٹ کو ہدایت دی کہ روٹس پرمٹس جاری ہونے کے بعد گاڑیاں نہ چلانے والوں کے اجازت نامے ایک ہفتے میں منسوخ کئے جائیں اور روٹ پرمٹس کی تجدید تین سال کے بجائے ایک سال میں کرانے کی پالیسی بنائی جائے ۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ ٹرانسپورٹ سندھ کا ٹارگٹ ہے کہ کراچی شہر میں ایک دو سال میں بڑی تعداد میں جدید ایئر کنڈیشنڈ بسیں لائے۔

اجلاس میں کراچی ٹرانسپورٹ اتحاد کے ارشاد بخاری، حاجی تواب، سندھ انٹرا سٹی بس سروس کے شبر منیب، رب نواز مظفر، سندھ بس اونرز ایسوسی ایشن کے افضل شیخ سمیت چنگچی رکشہ ایسوسی ایشن و دیگر نمائندہ تنظیموں کے نمائندے شریک تھے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں