The news is by your side.

Advertisement

اب ہمیں امریکا کے ڈومور کے کسی مطالبے پر کان نہیں دھرنا چاہئے، سراج الحق

لاہور : جماعت اسلامی کے امیر سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ ہمیں اب امریکا کے ڈومور کے کسی مطالبے پر کان نہیں دھرنا چاہئے، قبائلی عوام کی محرومیوں کا بھی ازالہ کرنا ہوگا۔

یہ بات انہوں نے لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ سراج الحق کا کہنا تھا کہ دورہ امریکہ کے موقع پر وزیر اعظم عمران خان کو عالم اسلام کے مسائل پر بات کرنی چاہئے اور ڈونلڈ ٹرمپ سے مرعوب ہونے کی بجائے کھل کر پاکستان کا مقدمہ لڑنا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں اب امریکا کے ڈومور کے کسی مطالبے پر کان نہیں دھرنا چاہیے کیونکہ افغانستان سے امریکی فوج کا انخلا اور افغان عوام کی مرضی کا نظام ضروری ہے۔

فاٹا الیکشن کے حوالے سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ انتخابات کے بعد قبائلی اضلاع باقاعدہ قومی دھارےمیں شامل ہوگئے ہیں، اب قبائلی اضلاع کی70سالہ محرومیوں کا ازالہ ہونا چاہیے، اس کے علاوہ ان اضلاع کو این ایف سی ایوارڈ سے3فیصد فنڈز اور سی پیک میں بھی حصہ ملنا چاہئے۔

مزید پڑھیں: اشرف غنی اورسراج الحق ملاقات، امیر جماعت اسلامی کا فاصلے ختم کرنے پر زور

واضح رہے کہ امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے افغان صدر اشرف غنی کے دورہ پاکستان کے موقع پر ملاقات کی تھی ان کا کہنا تھا کہ افغانستان اور پاکستان کے پاس دوستی کے علاوہ کوئی اور چوائس نہیں۔

سینیٹر سراج الحق کا کہنا تھا کہ پاکستان اور افغانستان کا روشن مستقبل امن سے وابستہ ہے، دونوں ممالک کے درمیان فاصلے امن دشمنوں کے پیدا کردہ ہیں، امن کے لئے افغان جماعتوں میں باہمی ڈائیلاگ ضروری ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں