The news is by your side.

Advertisement

بجٹ کو مسترد کرتے ہیں، منظور نہیں ہونے دیں گے، سینیٹر سراج الحق

لاہور : امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ حکومت کے بجٹ کو مسترد کرتے ہیں، منظور نہیں ہونے دینگے، معیشت کو آئی ایم ایف کے حوالے کردیا گیا ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا، انہوں نے کہا کہ حکمران ملک میں خوشحالی لانا چاہتے ہیں تو انہیں سودی نظام کو ختم اور پاناما لیکس میں شامل436لوگوں کا احتساب کرنا ہوگا۔

سراج الحق کا مزید کہنا تھا کہ حکومت نے بجٹ میں اعلان کیا ہے کہ کم ازکم تنخواہ17ہزار روپے ہوگی، میں حکومت سے کہتا ہوں کہ17ہزار روپے میں ایک گھر کا بجٹ بنا کر تو دکھائیں، حکومت نے معیشت کو آئی ایم ایف کے حوالے کردیا ہے، حکومت کے بجٹ کو مسترد کرتے ہیں، منظور نہیں ہونے دینگے۔

ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی، ن لیگ اور پیپلزپارٹی کے کلچرمیں کوئی فرق نہیں، سرمایہ کاروں اور جاگیرداروں کے ہوتے ہوئے پاکستان کبھی ترقی نہیں کرسکتا، پیپلزپارٹی اور ن لیگ دور حکومت میں جاگیردار ایوانوں میں جاتے تھے۔

سراج الحق نے واضح کیا کہ جماعت اسلامی پیپلزپارٹی یا ن لیگ کے ایجنڈے کاحصہ نہیں بنے گی، عوام کے لئے اب جماعت اسلامی کے علاوہ کوئی آپشن نہیں ہے، جماعت اسلامی کشمیر کاز کے لئے کام کرے گی، میں عام شہری کیلئے ایوانوں کے دروازےکھول کر دکھاؤں گا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں