The news is by your side.

Advertisement

بھارت کی صرف ایک ریاست میں‌ ڈیڑھ ہزار پرندوں‌ کی پراسرار موت

نئی دہلی: بھارت کی مختلف ریاستوں میں پرندوں کی پراسرار اموات میں اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے، طبی ماہرین نے پرندوں کی ہلاکت کیوجہ برڈ فلو کو قرار دیا مگر وہ کسی حتمی نتیجے پر نہیں پہنچ سکے۔

بھارتی میڈیا رپورٹ کے مطابق بھارت کی مختلف ریاستوں کے بعد اب مدھیا پردیش اور ممبئی میں بھی سڑک کنارے کوّوں سمیت دیگر پرندے مردہ حالت میں دیکھے گئے ہیں۔

ریاستی حکومت نے برڈ فلو کے خطرے کے پیش نظر ہدایت نامہ جاری کر دیا اور شہریوں کو یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ صورت حال پر گہری نظر رکھے ہوئے ہے، جلد اس مسئلے سے نجات حاصل ہوجائے گی۔

مزید پڑھیں: سال نو کی پہلی رات سیکڑوں پرندوں کی پراسرار موت، سڑک لاشوں سے بھر گئی

یہ بھی پڑھیں: جنگل سے ہزاروں زندہ چوزے برآمد

رپورٹ کے مطابق مدھیہ پردیش کے 41 اضلاع میں اب تک کووّں سمیت 1500 سے زائد پرندوں کی اموات ہوچکی ہیں جبکہ ماہرین نے 18 اضلاع میں برڈ فلو کی تصدیق بھی کردی ہے۔

قومی ہائی سیکیورٹی بیماریوں کی تحقیق کے لیے قائم کی جانے والی لیبارٹری کو اب تک 334 پرندوں سے حاصل ہونے والے نمونے بھیجے گئے ہیں جنہیں دیکھ کر ماہرین نے برڈ فلو کا اشارہ دیا مگر وہ کسی بھی حتمی نتیجے پر نہیں پہنچ سکے۔

حیران کن طور پر پرندوں کی موت ایک ہی طریقے سے ہورہی ہے، وہ مردہ حالت میں سڑک پر ایک ہی طرح سیدھے منہ ملے ہیں جس پر ماہرین نے تشویش کا اظہار کیا۔

جنگلی حیات اور مویشیوں کے لیے قائم کی جانے والی وزارت کے وزیر پریم سنگھ پٹیل نے پرندوں کی اموات کی تصدیق کی اور بتایا کہ وائرس کی روک تھام کے لیے ہر ممکن اقدامات اٹھائے جارہے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ وزیراعظم کے سامنے صورت حال پیش کی ہے جس پر انہوں نے ہدایت کی کہ آبی ذخائر، پرندوں کی پناہ گاہوں، چڑیا گھروں سمیت دیگر مقامات پر خاص نظر رکھی جائے اور مردہ پرندوں کو مٹی تلے دبا دیا جائے۔

یہ بھی پڑھیں: بھارت میں ایک اور پُراسرار بیماری پھیل گئی، ہزاروں بطخیں ہلاک

رپورٹ کے مطابق ماہرین نے جن 18 اضلاع میں برڈ فلو کی تصدیق کی اُن میں اندور، مندسور، آگر، نیمچ، اجین، کھنڈوا، کھرگون، گونا، شیوپوری، راج گڑھ، شاجا پور، ویدیشیا، بھوپال، ہوشنگ آباد، اشوک نگر، دتیا اور بڑاونی کے علاقے شامل ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں