The news is by your side.

صوفیہ مرزا نے سابق شوہر عمر فاروق کیخلاف عدالت سے رجوع کرلیا

لاہور: صوفیہ مرزا نے توشہ خانہ کی گھڑی خریدنے کے دعویدار سابق شوہر عمر فاروق کے خلاف لاہور ہائی کورٹ سے رجوع کرلیا۔

صوفیہ مرزا نے عمر فاروق کی جانب سے ہراساں کیے جانے کے خلاف لاہور ہائی کورٹ میں درخواست جمع کروا دی جس میں آئی جی پنجاب، سی سی پی او لاہور اور ڈی جی ایف آئی اے سمیت دیگر کو فریق بنایا گیا ہے۔

درخواست گزار نے مؤقف اختیار کیا کہ عمر فاروق اپنے اثر و رسوخ سے تھانہ سیکرٹریٹ اسلام آباد میں مقدمہ درج کرا چکا، بچیوں کی حوالگی سے متعلق 6 مقدمات عمر فاروق کے خلاف درج کرائے، اس کے باوجود پولیس عمر فاروق سے بچیوں کو بازیاب نہ کروا سکی۔

یہ بھی پڑھیں: عمر فاروق سے مجھے جان کا خطرہ ہے، سابقہ اہلیہ صوفیہ مرزا

صوفیہ مرزا نے کہا: ’عمر فاروق پولیس میں اثر و رسوخ سے اب میرے کے خلاف مزید مقدمات درج کرانا چاہتا ہے۔ اس کی ایما پر پولیس اور ایف آئی اے آئے روز چھاپے مار کر ہراساں کر رہی ہے۔‘

درخواست میں کہا گیا کہ عمر فاروق محکمہ امیگریشن کی مدد سے فراڈ کر کے میری بچیوں کو بیرون ملک لے گیا، اس کے فراڈ کی وجہ سے اس کا قومی شناختی کارڈ بلاک کیا جا چکا ہے، پولیس کو غیر قانونی ہراسگی سے نہ روکا تو مجھے ناقابلِ تلافی نقصان ہوگا۔

یہ بھی پڑھیں: شہزاد اکبر، صوفیہ اور ثنا اللہ عباسی کیخلاف مقدمہ درج

صوفیہ مرزا نے درخواست میں استدعا کی کہ عدالت پولیس اور ایف آئی اے کو گھر پر چھاپے مارنے اور ہراساں کرنے سے روکنے کا حکم جاری کر دے اور ساتھ ہی غیر قانونی چھاپے مارنے والے پولیس اور ایف آئی اے افسران کے خلاف کارروائی کا حکم دے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں