The news is by your side.

Advertisement

سورج کو گرہن لگ گیا، دنیا کے مختلف ممالک میں لوگ نظارہ کرنے لگے

دنیا کے مختلف ممالک میں رواں سال کا پہلا سورج گرہن شروع ہو گیا ہے، 3 بجکر 42 منٹ پر سورج گرہن اپنے عروج پر آ گیا ہے۔

رواں برس کا یہ پہلا سورج گرہن ہے جو پہلے شمالی کینیڈا میں شروع ہوا، سورج گرہن امریکا، روس، یورپ، گرین لینڈ اور شمالی ایشیا میں بھی دیکھا گیا۔

سورج گرہن کا نظارہ پاکستان میں نظر نہیں آیا، پاکستانی وقت کے مطابق دوپہر ایک بجکر بارہ منٹ پر سورج کو گرہن لگنے کا آغاز ہوا، اور 4 بجکر 34 منٹ پر ختم ہوگا۔

آسمان میں سورج آگ کی انگوٹھی (Ring of fire) کی طرح نظر آ رہا ہے، یہ زمین کے شمالی نصف کرے پر سب سے زیادہ واضح ہے جس میں کینیڈا اور سائبیریا کے کچھ حصے شامل ہیں۔

یہ سورج گرہن جزوی ہے، جس کا مطلب ہے کہ اس کے سائے میں رہنے والے لوگ دن کے وقت اندھیرے میں نہیں ڈوبیں گے، سورج گرہن جزوی طور پر شمالی امریکا کے کچھ علاقوں، یورپ کے کچھ علاقوں بشمول فرانس اور برطانیہ، اور شمالی ایشیا میں نظر آیا۔

اگر آسمان صاف رہا تو لندن کے باسی بھی جزوی طور پر سورج گرہن کا مشاہدہ کر پائیں گے۔

ماہرین نے تنبیہ کی ہے کہ گرہن کے وقت سورج کو براہ راست ہرگز نہ دیکھیں، حتیٰ کہ دھوپ کے چشمے یا بادل کے پیچھے چھپا ہو تب بھی نہ دیکھیں، کیوں کہ آنکھ کا پردہ (retina) اگر جل گیا تو پھر یہ دوبارہ ٹھیک نہیں ہو سکتا۔

جو لوگ سورج گرہن دیکھنا چاہتے ہیں وہ اس کے لیے خاص طور پر تیار کردہ چشمہ خریدیں، نیز پیرس آبزرویٹری کا کہنا تھا کہ وہ ناظرین کے لیے یو ٹیوب چینل پر اس کے نظارے کو لائیو دکھائیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں