site
stats
اے آر وائی خصوصی

ایسے شعبے جن کی عید پر بھی تعطیل نہیں

عید الفطرکے دن ہر شخص کی خواہش ہوتی ہے کہ وہ اپنے اہل خانہ کے ہمراہ عید کی خوشیاں منائے مگر کچھ شعبوں سے وابستہ لوگ ایسے بھی ہیں جنہیں ہرصورت دفاتر (ڈیوٹیوں) میں حاضری یقینی بنانی ہوتی ہے۔

دنیا بھر میں بسنے والے مسلمان عید الفطر منا رہے ہیں، پاکستان سمیت دنیا بھر میں بسنے والے مسلمان کچھ ایسے شعبوں سے وابستہ ہیں جنہیں اہم ایام میں چھٹی کے روز بھی دفاتر میں حاضری لگانی ہوتی ہے۔

اگرصرف ملکِ پاکستان کی بات کرلی جائے تو  آپ  کو نظر آئے گا کہ ایسے لوگ بھی ہیں جو عید کی مبارک خوشیاں اپنے اہل خانہ کے ساتھ منانے کے بجائے دفاتر میں حاضریاں دے رہے ہوتے ہیں۔

پڑھیں: ملک بھرمیں آج عید الفطرمذہبی جوش وجذبے سے منائی جارہی ہے

مسلح افواج و حساس ادارے

مسلح افواج کے جوان اور حساس ادارے بشمول پولیس و دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکار ملک بھر میں امن و امان کو برقرار رکھنے اور پرمسرت موقع پر کی خوشیوں کی خاطر اپنی ڈیوٹیاں سرانجام دیتے ہیں۔ عوامی مقامات اور ملکی سرحدوں کی حفاظت پر مامور جوان عید کی خوشیاں ڈیوٹی کے مقام پر مناتے ہیں تاکہ عوام عید کی خوشیوں سے مکمل طور پر محظوظ ہوسکیں۔

پڑھیں: سپہ سالار کی جوانوں کے ساتھ عید

مسلح افواج کے سربراہان اور اعلیٰ افسران جوانوں کے حوصلے بلند کرنے کے لیے اُن کے ساتھ ہی نمازِ عید ادا کرتے ہیں اور اُن سے گلے مل کر پرمسرت دن کی مبارک باد پیش کرتے ہیں، یہ موقع جوانوں کے لیے قابلِ فخر ہوتا ہے کہ جب وہ اپنے درمیان سربراہ کو پاتے ہیں اور اُس کی داد بھی وصول کرتے ہیں۔

سیاسی و عوامی نمائندے

صدر اور وزیراعظم سمیت اراکین اسمبلی و عوامی نمائندے بھی عید کے دن کو عوام کے لیے مختص کردیتے ہیں اور اس دن سب کو مبارک باد دیتے اور وصول کرتے نظر آتے ہیں۔

الیکٹرانک میڈیا (صحافت)

ذرائع ابلاغ سے وابستہ افراد عوام تک بدلتے حالات و واقعات کی رسائی کے لیے دفاتر میں موجود ہوتے ہیں، یہی وجہ ہے کہ گھروں میں بیٹھے ناظرین ہر تھوڑی دیر میں ٹی وی اسکرین پر خبریں اورمختلف تفریح پروگرام ملاحظہ کرتے ہیں۔

ایک پروگرام کے آن ائیر ہونے کے پیچھے پوری ٹیم کا ہاتھ ہوتا ہے جن میں کیمرے میں نظر آنے والے شخص کا جہاں تک اہم کردار ہوتا ہے وہی ڈائریکٹر، پروڈیوسر، کیمرہ مین، اسکرپٹ رائٹر وغیرہ شامل ہیں۔

سیکیورٹی گارڈ / چوکیدار

عید کے موقع پر  دفاتر میں تعینات سیکیورٹی گارڈز کی بھی چھٹی نہیں ہوتی اور وہ عید کی خوشیاں ساتھیوں کے ساتھ مناتے ہیں۔

ڈاکٹرز

شعبہ طب میں امور سرانجام دینے والے ڈاکٹرز کسی بھی ایمرجنسی کی صورت میں اسپتالوں میں موجود ہوتے ہیں تاکہ طبیعت ناسازی یا کسی بھی حادثے کی صورت میں اسپتال آنے والے مریض کو فوری طور پر علاج و معالجے کی سہولیات فراہم کی جاسکیں۔

فلاحی ادارے (ایمبولینس ڈرائیور)

ایمبولینس ڈرائیور بھی عید کے روز اپنے امور سرانجام دیتےہیں اور وائرلیس پر ملنے والی ہدایت کے مطابق اپنی گاڑی کو اُسی سمت دوڑاتے نظر آتے ہیں۔

دیگر شعبوں کے ملازمین

کال سینٹر پر ڈیوٹیاں سرانجام دینے والے افراد بھی اس بات کے پابند ہوتے ہیں کہ وہ شیڈول کے مطابق عید کے روز نوکری پر آئیں اور موصول ہونے والی کالز پر بھرپور جواب دیں، کسی بھی بینک یا موبائل فون کمپنی کی ہیلپ لائن پر بیٹھے نمائندگان عید کے روز بھی آپ کی رہنمائی کرتے نظر آتے ہیں۔

ذاتی ملازمین بھی اس بات کے پابند ہوتے ہیں کہ وہ صاحب کے گھر پر عید کے روز موجود رہیں کیونکہ اس روز سارا اہل خانہ گھر پر موجود ہوتا ہے تو (ماسیوں، خاکروب، چوکیدار اور ڈرائیورز) کا ڈیوٹی پر رہنا لازم ہوتا ہے۔

ان چیدہ چیدہ شعبوں کے علاوہ اور بھی کئی ایسے شعبے ہیں جہاں لوگ اس بات کے پابند ہوتے ہیں کہ وہ عید کے ایام میں بھی روزانہ کی طرح اپنی ڈیوٹیاں سرانجام دیں۔


اگرآپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اوراگرآپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پرشیئرکریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top