The news is by your side.

Advertisement

سری لنکا حملے، مسلمانوں کا مسیحی برادری کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے روزہ

کولمبو: سری لنکا میں مقیم مسلمانوں نے مسیح برادری کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے جمعرات کے دن روزہ رکھا اور گرجا گھروں کا دورہ بھی کیا۔

تفصیلات کے مطابق سری لنکا میں مقیم مسلمانوں نے ایسٹر پر گرجا گھروں میں ہونے والے دھماکوں کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے آج جمعرات کے روز متاثرہ افراد کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے روزہ رکھا۔

مسلمانوں کے اس اقدام کا مقصد اپنے سری لنکن ساتھیوں کو یہ بتانا تھا کہ اسلام اور دہشت گردی دونوں علیحدہ علیحدہ چیزیں ہیں، شریعت پر عمل پیرا مسلمان کبھی کسی پر ظلم نہیں کرتے تو قتل بہت دور کی بات ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر منگل کے روز ایک نوجوان نے اظہار یکجہتی کے لیے MyFastMySrilanka# ہیش ٹیگ کے ساتھ تجویز پیش کی اور بتایا کہ دہشت گردی کو شکست دینے کے لیے ہمیں متحد ہونے کی ضرورت ہے کیونکہ انتہاء پسندوں کا کوئی مذہب یا قوم نہیں وہ اپنے مذموم مقاصد کے لیے کسی کا بھی گھر اجاڑ دیتے ہیں۔

مزید پڑھیں: سری لنکا دھماکے، ہلاکتوں کی تعداد 359 ہوگئی

نوجوان کی تجویز سری لنکن مسلمانوں کو پسند آئی اور دیکھتے ہی دیکھتے اس مہم میں ہزاروں لوگ شریک ہوگئے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق سری لنکا میں بسنے والے مسلمانوں نے روزہ رکھ کر ہلاک شدگان، زخمیوں اوراُن کے ورثا و لواحقین سے ملاقات کر کے اپنے مکمل تعاون کی پیش کش کی جبکہ انہوں نے گرجا گھر جاکر دعا بھی کی۔

مسلمانوں نے اپنے اس عمل سے سری لنکا میں بسنے والے تمام مذاہب کے لوگوں کو پیغام دیا کہ اس طرح کی دہشت گردانہ کارروائیوں سے دشمن ہمیں کمزور کرنے اور آپس میں لڑانے کی کوشش کررہا ہے مگر ہم سب اُسے ناکام بنائیں گے اور اپنے ملک کو امن کا گہوارا بنائیں گے۔

یاد رہے کہ اتوار کے روز سری لنکا کے گرجا گھروں میں ایسٹر کی تقریبات جاری تھیں کہ اچانک یکے بعد دیگرے 8 خودکش دھماکے ہوئے جس میں خواتین اور بچوں سمیت 360 سے زائد افراد ہلاک جبکہ 500 سے زائد زخمی ہوئے تھے۔

بعد ازاں شدت پسند تنظیم داعش نے حملے کی ذمہ داری قبول کی تھی، سری لنکا کے حساس اداروں نے سی سی ٹی وی فوٹیج کی مدد سے تحقیقات کا آغاز کیا اور اب تک 16 ملزمان کو شک کی بنیاد پر حراست میں لیا گیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں