The news is by your side.

اسٹیٹ بینک نے زرمبادلہ کے ضوابط میں ترامیم کردیں

کراچی : اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے ایکسچینج کمپنیوں کے باہمی لین دین میں شفافیت بڑھانے کے لیے زرمبادلہ کے قواعد و ضوابط میں ترامیم کردیں۔

بینک دولت پاکستان نے ایکسچینج کمپنیوں کے درمیان زر مبادلہ کی لین دین میں دستاویزیت اور شفافیت کو فروغ دینے کی غرض سے زرمبادلہ ضوابط میں ضروری ترامیم کردی ہیں۔

ترمیم شدہ ضوابط کے مطابق ایکسچینج کمپنیوں، ایکسچینج کمپنیوں کے فرنچائزز اور بی کٹیگری کی ایکسچینج کمپنیوں کے لیے لازمی ہوگیا ہے کہ وہ اپنے بینک کھاتوں کے ذریعے آپس میں زر مبادلہ کی خریدوفرخت کا پاکستانی روپے میں تصفیہ (سیٹلمنٹ) کروائیں۔

اس بات کو یقینی بنانے پر زور دیا گیا ہے کہ موجودہ ضوابط کے مطابق ایکسچینج کمپنیوں اور بی کٹیگری کی ایکسچینج کمپنیوں کے سی سی ٹی وی سسٹم ہر وقت (یعنی روزانہ چوبیس گھنٹے اور ہفتے میں ساتوں دن) درست کام کرتے رہنے چاہئیں۔

تاہم شفافیت کو یقینی بنانے کے لیے یہ ہدایت کی گئی ہے کہ جس دورانیے میں کسی آؤٹ لیٹ پر کسی وجہ بشمول تکنیکی اسباب کی بنا پر سی سی ٹی وی سسٹم کام نہ کررہا ہو اُس دورانیے میں ایکسچینج کمپنیاں اور بی کٹیگری کی ایکسچینج کمپنیاں کوئی کاروباری سرگرمی انجام نہیں دیں گی تاوقتیکہ سی سی ٹی وی سسٹم بحال نہ ہوجائے۔

مزید برآں سی سی ٹی وی سسٹم کے ذریعے وڈیو ریکارڈنگ کو محفوظ رکھنے کی کم از کم مدت دو ماہ سے بڑھا کر چھ ماہ یا اس وقت تک کردی گئی ہے جب اسٹیٹ بینک کمپنی کا معائنہ کرے ان میں جو مدت بھی پہلے ہو۔

اس طرح آڈٹ اور معائنے کے مقاصد کے لیے سی سی ٹی وی ریکارڈنگ کی دستیابی کو یقینی بنایا جاسکے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں