ہفتہ, مئی 18, 2024
اشتہار

سمندر کی تہہ میں زیادہ دیر تک رہنے کا نیا عالمی ریکارڈ قائم

اشتہار

حیرت انگیز

امریکی یونیورسٹی کے ایک پروفیسر نے مسلسل 74 دن زیر آب رہ کر نیا ریکارڈ اپنے نام کرلیا، اس سے قبل یہ ریکارڈ 2014 میں بروس سینٹرول اور جیسیکا فین نے قائم کیا تھا۔

پروفیسر جوزف ڈیٹوری کو ڈاکٹر ڈیپ سی بھی کہا جاتا ہے اور انہوں نے فلوریڈا میں اسکوبا ڈائیورز کے لیے زیر آب قائم جولیس انڈر سی لاجز میں رہ کر یہ ریکارڈ بنایا، وہ یہاں یکم مارچ سے مقیم ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق ان کارہائشی پوڈ بحر اوقیانوس کی سطح سے 30 فٹ گہرائی میں موجود ہے اور 100 اسکوائر رقبے پر پھیلا ہوا ہے۔

- Advertisement -

اگرچہ یہ بہت چھوٹی جگہ تھی مگر اس میں ان کے کام کرنے کے حصے کے ساتھ ساتھ کچن، باتھ روم، 2 سونے کے کمرے اور ایک چھوٹا سا سوئمنگ پول بھی تھا، جو درحقیقت اندر آنے اور باہر جانے کا راستہ بھی تھا۔

وہ یکم مارچ سے زیرآب رہ رہے ہیں / رائٹرز فوٹو

اپنے شب و روز میں ڈاکٹر ڈیٹوری نے پروٹین سے بھرپور غذا لی، روزانہ باقاعدگی سے پش اپس کیے اور بھرپور نیند لی۔

پروفیسر جوزف یکم مارچ کو اس جگہ رہنے کے لیے آئے تھے اور ابھی بھی باہر نہیں آئے ہیں ان کا نو جون تک واپسی کا پروگرام ہے کیونکہ ان کا ارادہ ہے کہ وہ اس مقام پر پورے سو دن مکمل کریں۔

انہوں نے اسے پراجیکٹ نیپچون 100 کا نام دیا ہے جس کا مقصد طبی اور سمندری تحقیق کو باہم ملا دینا ہے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل یہ ریکارڈ 2014 میں بروس سینٹرول اور جیسیکا فین نے قائم کیا تھا جو اسی جگہ 73 دن 2 گھنٹے اور 34 منٹ تک مقیم رہے تھے۔

Comments

اہم ترین

ویب ڈیسک
ویب ڈیسک
اے آر وائی نیوز کی ڈیجیٹل ڈیسک کی جانب سے شائع کی گئی خبریں

مزید خبریں