دریائے سندھ میں پھنسی ڈالفن کو بچالیا گیا -
The news is by your side.

Advertisement

دریائے سندھ میں پھنسی ڈالفن کو بچالیا گیا

کراچی: وائلڈ لائف ڈیپارٹمنٹ اور ورلڈ وائلڈ فنڈ نے خیر پور میں مشترکہ کارروائی کرتے ہوئے پانچ فٹ لمبی ڈالفن کو بچالیا، دریائے سندھ میں پائے جانے والی یہ نابینا ڈالفن دنیا میں نایاب ہے۔

تفصیلات کے مطابق وائلڈ لائف ڈیپارٹمنٹ اور ورلڈ وائلڈ فنڈ نے خیرپور فیڈر ایسٹ کینال پر ایک ریسکیو آپریشن کیا اور پھنسی ہوئی ڈالفن کوبازیاب کرایا۔

ورلڈ وائلڈ فنڈ کے مطابق فیض بحر نامی اس کینال میں پھنس جانے والی ڈالفن ایک نر ہے اور اس کا وزن تیس کلوگرام ہے اور وہ 14 نومبر سے پھنسی ہوئی تھی اور ادارے کا عملہ اسی دن سے اس کی نگرانی کرر ہا تھا۔

محمد عمران ملک جو کہ ورلڈ وائلڈ فنڈ سے تعلق رکھتے ہیں‘ انکا کہنا ہے کہ ا س ڈالفن کے پھنسنے کی اطلاع مقامی آبادی نے دی اور یہ اس سال کا آٹھواں واقعہ ہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ خوراک کی تلاش میں کینال کے دروازوں کے پاس منڈلاتی ڈالفن اکثر معاون نہروں میں چلی جاتی ہیں اور جب پانی کی سطح نیچے اترتی ہے تو وہ وہاں پھنس جاتی ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ پہلے ایسے واقعات جنوری میں ہوا کرتے تھے تاہم اس سال یہ واقعات مسلسل ہورہے ہیں۔

یاد رہے کہ دریائے سندھ میں موجود بلھن کی آنکھیں ہمیشہ سے ناپید نہ تھیں بلکہ دنیا بھر میں پائی جانے والی ڈولفن کی یہ واحد قسم ہے جو دریائے سندھ کے گدلے پانیوں کو اپنی آنکھیں دے بیٹھی ہے۔

حیاتیات کےماہرین کے مطابق بلھن میملز کے گروپ میں شمار ہوتی ہے اور یہ دنیا کی واحد ڈولفن ہے جس کی آنکھیں نہیں ہیں۔

سائنسی تحقیق کے مطابق دریائے سندھ میں صدیوں سے رہنے کی وجہ سے گدلے اور سلٹ آمیز پانی نے اس کی آنکھوں کو بے نور کر دیا ہے لیکن یہ روشنی کے رخ اور شدت کے سہارے اپنی سمت کا تعین کر لیتی ہے یعنی بلھن میں موجود سونر سسٹم سمت نمائی کا کام دیتا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں