The news is by your side.

Advertisement

نہر سوئز : راستہ کھلنے کے باوجود ڈھائی سو جہاز اپنی باری کے منتظر

قاہرہ : نہر سوئز میں پھنسے والے بحری جہاز کو نکالنے کے بعد281 مال بردار جہاز اپنی منزل کی جانب روانہ ہوگئے تاہم اب بھی249 بحری جہازوں کا نکلنا باقی ہے۔

مصر کی نہر سوئز میں پھنسنے والے ایور گرین نامی تجارتی جہاز ہٹانے کے باوجود اس راستے سے گزرنے کیلئے جہازوں کی لمبی قطاریں اب بھی لگی ہوئی ہیں۔ نہر سوئز میں ٹریفک جام ختم ہونے کے تیسرے دن بھی کئی بڑے کارگو جہاز یہاں سے گزرے۔

سوئز کینال اتھارٹی کے چیئرمین لیفٹیننٹ جنرل اسامہ ربی نے نہر سے جہاز ہٹانے والی ٹیم کے اعزاز میں منعقد ایک تقریب کے دوران بتایا کہ پیر کی شام سے بدھ تک 194 بحری جہاز جس پر12 ملین وزن سامان لدا ہوا تھا۔ ان جہازوں کو یہاں سے گزارا جاچکا ہے اور جمعرات کو 87 مزید بحری جہاز کو یہاں سے گزرنا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ”بحیرہ احمر کو بحیرہ روم سے ملانے والی نہر سوئز پر ٹریفک نظام کو بحال کئے جانے کے باوجود ابھی بھی کئی تجارتی بحری جہاز اپنی باری کا انتظار کررہے ہیں۔

تازہ ترین رپورٹ کے مطابق 249 تجارتی جہاز جس پر خام تیل سے لے کر مویشی تک لدے ہوئے ہیں، اپنی باری کے انتظار میں ہیں، ان تجارتی جہازوں کو گزرنے میں ابھی کئی دن لگ سکتے ہیں۔

واضح رہے کہ نہر سوئز میں ایور گرین کے پھنس جانے کے باعث سمندری تجارت کو بڑا نقصان ہوا ہے یہاں سے روزانہ اربو ڈالر کے سامان کو ایک جگہ سے دوسری جگہ منتقل کیا جاتا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ اس ٹریفک جام کو ختم ہونے کے باوجود تمام تجارتی جہاز کو یہاں سے گزرنے میں دس مزید دن لگ سکتے ہیں جبکہ منگل کے روز مصر کے صدر نے کہا تھا کہ اس میں محض تین دن لگیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں