The news is by your side.

Advertisement

مقروض ماں نے مجبوری میں بیٹی فروخت کردی

کراچی: سندھ کے ضلع سکھر میں بیوہ خاتون نے مجبوری کے عالم میں اپنی کم عمر بیٹی کی شادی گیارہ سال بڑے شخص سے طے کر دی۔

نمائندہ اے آر وائی نیوز سکھر علی محمد شر کے مطابق صلح پٹ کی رہائشی خاتون مقروض تھیں اور وہ معاشی تنگ دستی کی وجہ سے سود سمیت قرض ادا نہیں کرپارہی تھیں۔

بیوہ ماں نے سود اور قرض کی رقم معاف کروانے کے لیے بطور جرمانہ اپنی گیارہ سالہ بیٹی ضمیرا کو  2 لاکھ 60 ہزار روپے میں فروخت کیا جس کے بعد اُس کی شادی 32 سالہ حب دار نامی شخص سے طے ہوئی۔

بیورو چیف سکھر لالہ اسد پٹھان کے مطابق اے آر وائی کی ٹیم کو گزشتہ روز شادی سے متعلق اطلاع موصول ہوئی تھی جس کے بعد ایس ایس پی سکھر عرفان سمو سے رابطہ کیا گیا۔

اے آر وائی ٹیم کی مدد سے پولیس پارٹی نے شادی کی تقریب میں اُس وقت چھاپہ مارا جب بچی کو رخصت کرنے کی تیاریاں کی جارہی تھیں۔ پولیس نے کارروائی کر کے دلہا اور باراتیوں کو گرفتار کرلیا جبکہ دلہن کو بھی حفاظتی تحویل میں لے لیا گیا۔

ایس ایس پی سکھر نے یقین دہانی کرائی کہ نکاح خواں کو بھی جلد قانون کی گرفت میں لایا جائے گا اور اگر بااثر ملزمان کے خلاف کسی نے مقدمہ درج کرنے کی درخواست نہ دی تو سرکار کی مدعیت میں پرچہ کاٹا جائے گا۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں