The news is by your side.

Advertisement

ہمیں کھو کر بہت پچھتاؤ گے، جب ہم نہیں ہوں گے

معروف شاعر، سرور بارہ بنکوی کی انتالیسویں برسی آج منائی جارہی ہے

لازوال گیتوں کے شاعر سرور بارہ بنکوی کی انتالیسویں برسی آج منائی جارہی ہے، ان کے سدابہار نغمات آج بھی کانوں میں رس گھول رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق 30 جنوری 1919 کو بارہ بنکی، اتر پردیش میں پیدا ہونے والے باکمال شاعر نے پاکستانی انڈسٹری کو خوب صورت گیتوں‌ سے نوازا۔

ان کا شمار اردو کے ممتاز شعرا اور مستند فلم سازوں میں‌ ہوتا تھا، انھوں نے مشہور پاکستانی فلم “آخری اسٹیشن” بنائی۔

سروربارہ بنکوی نے شائقین فن کو تیری یاد آ گئی غم خوشی میں ڈھل گئے، ہمیں کھو کر بہت پچھتاؤ گے جب ہم نہیں ہوں گے، کبھی میں سوچتا ہوں کچھ نہ کچھ کہوں جیسے لازوال گیت تخلیق کیے۔

اس منفرد شاعر کے ہاں جذبات کا اظہار اپنے اوج پر دکھائی دیتا، الفاظ موتیوں کی طرح پروے جاتے، خیالات نغمگی کے حامل ہوتے اور یوں ان  کے مصرعے دلوں میں گھر کر جاتے۔

ان کا اصل نام سعید الرحمن تھا، انھوں نےعملی زندگی کا آغاز فلموں کے مکالمے لکھ کر کیا، بعد ازاں فلم ساز ی اور ہدایت کار ی کے میدان میں بھی فن کے جوہر دکھائے۔ 3 اپریل 1980 کو ان کا ڈھاکا، بنگلا دیش میں انتقال ہوا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں