ڈائریکٹر کو خوش نہ کرنے پر فلم سے نکال دیا گیا، بھارتی اداکارہ -
The news is by your side.

Advertisement

ڈائریکٹر کو خوش نہ کرنے پر فلم سے نکال دیا گیا، بھارتی اداکارہ

ممبئی: بھارتی اداکارہ سروین چاؤلہ نے انکشاف کیا ہے کہ فلم میں کام حاصل کرنے پر ہدایت کار کے ساتھ رات گزارنے کی پیش کش کی گئی تھی تاہم میں نے اسے مسترد کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق ہندو مذہب چھوڑنے والی بالی ووڈ اداکارہ سروین چاؤلہ نے اپنے ایک انٹرویو میں کہا ہے کہ ’’فلمی دنیا میں قدم رکھنے کے بعد بڑی فلم میں کام کرنے کی پیش کش ہوئی جس کے لیے میں نے ہامی بھر لی تھی‘‘۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’’ہدایت کار کے قریبی دوست نے فلم میں کام دینے کے بدلے کچھ شرائط رکھیں جن میں رات ساتھ گزارنے اور فلم کی شوٹنگ تک ہدایت کار کے ساتھ سونے کی شرط رکھی گئی تھی‘‘۔

اداکارہ نےمزید کہا کہ ’’میں نے ہدایت کار کی شرائط ماننے سے فوری طور پر انکار کرتے ہوئے شرائط مسترد کردیں تو مجھے فلم اور جہاں رہائش پذیر تھی اُس گھر سے آدھی رات کو بے دخل کردیا گیا‘‘۔

پڑھیں:  بالی ووڈ اداکارہ ’’سروین چاولہ‘‘ ہندو مذہب چھوڑ دیا

 یاد رہے کہ فلم نگری میں قدم رکھنے کے لیے اداکاراؤں کے ساتھ اس قسم کے مسائل درپیش ہوتے ہیں، فلم انڈسٹری میں قسمت آزمائی کرنے والی اداکار اور اداکاؤں کو بہت تلخ مصائب جھیلنے پڑتے ہیں جس کے بعد وہ کوئی مقام حاصل کرنے میں کامیاب ہوتے ہیں۔

ماضی میں بھی بالی ووڈ اداکارؤں کی جانب سے اس قسم کے تحفظات کا اظہار کیا جاچکا ہے ،ہندو مت چھوڑ نے والی اداکارہ نے فلم نگری میں کام ملنے کے لیے کی جانے والی پیش کش سے پردہ اٹھادیا ہے۔

واضح رہے کہ سروین چاؤلہ نے رواں سال جون میں ہندو مذہب چھوڑ کر بدھ مت مذہب اختیار کرنے کا اعلان کیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں